راجستھان: ایک نوجوان نے طالبہ کا دو ماہ تک کیا جنسی استحصال– News18 Urdu

راجستھان: ایک نوجوان نے طالبہ کا دو ماہ تک کیا جنسی استحصال

سنگھ نے بتایا کہ پولیس نے تینوں کی گرفتاری کے لئےان کے گھر اور دیگر ٹھکانوں پر چھاپے مارے لیکن کوئی بھی گرفت میں نہیں آیا۔

Jun 01, 2019 02:55 PM IST | Updated on: Jun 01, 2019 02:56 PM IST

راجستھان کے ضلع ہنومان گڑھ میں ایک طالبہ کا ایک نوجوان کی طرف سے دو ماہ تک جنسی استحصال کرنے کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ پولیس کے مطابق شری گنگا نگر کی ایک انگلش میڈیم اسکول میں پڑھ رہی نابالغ لڑکی کا تقریبا دو ماہ قبل ہریانہ کے ایک نوجوان کے ذریعہ مبینہ اغوا کر نے اور دو ماہ تک جنسی استحصال کرنے کا معاملہ ہنو مان گڑھ خاتون تھانے میں درج کیا گیا ہے۔ معاملے میں بتایا گیا کہ نوجوان نے لڑکی کو ضلع ہنومان گڑھ کے نوهر قصبے میں کرائے کے مکان میں رکھا۔ نوجوان پر الزام ہے کہ اس دوران اس نے نابالغ لڑکی کا جنسی استحصال کیا۔ متاثرہ کے والد کی طرف سے دی گئی رپورٹ کی بنیاد پر پولیس نے نوجوان، اس کے بھائی اور والد پر مقدمہ درج کیا ہے۔

خاتون تھانہ انچارج بہادر سنگھ نے بتایا کہ جمعہ دیر شام یہ کیس درج کئے جانے کے بعد رات کو ملزم امت دیهڈو کے مکان اور دیگر ٹھکانوں پر چھاپے مارے گئے لیکن امت نہیں ملا۔ امت ہریانہ کے سرسا ضلع میں ایلناباد سب ڈویژن میں گاؤں میٹھی سریراں کا رہنے والا ہے۔ امت نے زبردستی لڑکی کو اپنے ساتھ رکھا۔ گذشتہ 26 مئی کو لڑکی واپس اپنے گھر آ گئی۔ اس کے بعد اس کے والد نے اس معاملے میں امت کے بھائی سمت اور اس کے والد ارجن رام کے خلاف بھی مبینہ سازش میں ملوث ہونے پر تینوں کے خلاف معاملہ درج كرایا۔

راجستھان: ایک نوجوان نے طالبہ کا دو ماہ تک کیا جنسی استحصال

علامتی تصویر

سنگھ نے بتایا کہ پولیس نے تینوں کی گرفتاری کے لئےان کے گھر اور دیگر ٹھکانوں پر چھاپے مارے لیکن کوئی بھی گرفت میں نہیں آیا ۔ متاثرہ لڑکی کی آج طبی جانچ کرائی جا رہی ہے ۔ معاملے میں جانچ چل رہی ہے ۔

Loading...

Loading...