دبنگ باپ کے بیٹوں نے کلاس میں دکھائی دبنگئی، پہلے بیچ کے ساتھی کو پیٹا پھر ویڈیو کیا وائرل– News18 Urdu

دبنگ باپ کے بیٹوں نے کلاس میں دکھائی دبنگئی، پہلے بیچ کے ساتھی کو پیٹا پھر ویڈیو کیا وائرل

بہار کے ایک اسکول میں دبنگ باپ کے بیٹوں کی دبنگئی سامنے آئی ہے۔ معاملہ مظفر پور واقع سینٹرل اسکول کا ہے جہاں پہلے تو ایک طالب علم کو بری طرح سے مارا پیٹا گیا اور پھر اس کی پٹائی کی ویڈیو بنا کر اسے وائرل کیا گیا۔

Oct 13, 2016 06:12 PM IST | Updated on: Oct 13, 2016 06:14 PM IST

پٹنہ۔ بہار کے ایک اسکول میں دبنگ باپ کے بیٹوں کی دبنگئی سامنے آئی ہے۔ معاملہ مظفر پور واقع سینٹرل اسکول کا ہے جہاں پہلے تو ایک طالب علم کو بری طرح سے مارا پیٹا گیا اور پھر اس کی پٹائی کی ویڈیو بنا کر اسے وائرل کیا گیا۔ سوشل میڈیا پر وائرل ہوئے اس ویڈیو میں سینٹرل اسکول کے کلاس کے اندر ہی طالب علم کو بری طرح مارا پیٹا جا رہا ہے۔

ویڈیو میں متاثرہ طالب علم بار بار بچاؤ کے لئے آواز لگا رہا ہے لیکن دبنگ طالب علموں کا گروپ ہاتھ پیر اور مکے کے بعد بیلٹ اور جوتے سے طالب علم کو بری طرح پیٹتے ہوئے دکھائی دے رہا ہے۔ ویڈیو میں مارنے والے دو سگے بھائیوں کو پہچان لیا گیا ہے۔

وشال اور وکی نامی طالب علم دونوں سگے بھائی ہیں اور اسکول میں بالترتیب 12 ویں اور 11 ویں کے طالب علم ہیں۔ پیٹنے والے دونوں طالب علموں کی شناخت علاقے کے بدنام ششی بھوشن عرف فوجی کے بیٹے کے طور پر کی گئی ہے۔ فوجی کئی معاملوں میں نامزد ہے اور فی الحال مظفر پور کیندریہ کارا میں بند ہے۔ پٹائی کھانے والے طالب علم کی شناخت شہر کے رام ديالو نگر میں رہنے والے اتم کمار کے طور پر کی گئی ہے جو 12 ویں کلاس کے بی سیکشن کا طالب علم ہے۔

معلومات کے مطابق اسکول کے دوسرے سیشن میں پڑھنے والے اتم کمار نے پہلے سیشن میں پڑھنے والے وشال عرف تنمے سنگھ کے بارے میں اسکول کی انتظامیہ سے مار پیٹ سمیت اس کی دوسری بد اعمالیوں کی شکایت کی تھی۔ اس بات سے ناراض فوجی کے دونوں بیٹوں نے اپنے ساتھیوں کے ساتھ مل کر اتم کی کلاس روم میں پٹائی کی اور پھر طالب علموں کے درمیان اپنے نام کا آتنک پھیلانے کے لئے مارپیٹ کی ویڈیو بنا کر ساتھیوں کے بیچ بھیج دیا۔

دونوں بھائی وشال اور وکی کی کئی اور کرتوتوں کے چرچے زوروں پر ہیں لیکن کوئی بھی منہ کھولنے کو تیار نہیں ہے۔ اسکول کے پرنسپل اس معاملے میں کچھ بھی بولنے اور کیمرے سے ویڈیو تک بنانے سے صاف طور پر انکار کر رہے ہیں لیکن آف دی ریکارڈ پرنسپل نے ویڈیو کلپ کو اسکول کو مانتے ہوئے اسے 25 اگست کا بتایا ہے۔