ٹرمپ نے ویزا پروگرام کا جائزہ لینے کے احکامات دئے

Apr 19, 2017 12:14 PM IST | Updated on: Apr 19, 2017 12:14 PM IST

كنوشا (واشنگٹن)۔  امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے ملک میں انتہائی ماہرین میں غیر ملکی کارکنوں کو موقع دینے والے ویزا پروگرام کا جائزہ لینے کے احکامات دیئے ہیں اور انہوں نے تکنیکی اور آؤٹ سورسنگ کمپنیوں کو نوٹس دے کر مطلع کیا کہ اس میں مستقبل میں ممکنہ تبدیلی ہو سکتی ہے۔ مسٹر ٹرمپ نے ’امریکہ فرسٹ‘ کے تحت چلائی گئی مہم کو آگے بڑھاتے ہوئے ایچ -1 بی ویزا پروگرام پر کل ایک ایگزیکٹو آرڈر پر دستخط کئے تھے۔ مسٹر ٹرمپ نے حکم پر دستخط کرنے کے بعد کہا، ’’ہمارے امیگریشن سسٹم میں خرابی کی وجہ سے ہر طبقے کے امريكيوں کے روزگار غیر ملکی کارکنوں کے حصے میں جا رہے ہیں۔ کمپنیاں، کم تنخواہ دے کر غیر ملکیوں کو ملازمت پر رکھ لیتی ہیں جس سے امريكيوں کی روزگار پر ضرب پڑ رہے ہیں۔ یہ سب اب ختم ہوں گے۔ طویل وقت سے امریکی ملازم ویزا کے عمل کا غلط استعمال کو ختم کرنے کا مطالبہ کرتے رہے ہیں‘‘۔

اس طرح کی تبدیلی سے ٹاٹا کنسلٹنسی سروسز لمیٹڈ، كاگنجینٹ ٹیک سالیوشن کارپوریشن اور انفوسس لمیٹڈ جیسے کمپنیوں پر اثر پڑ سکتا ہے جہاں پر ہزاروں غیر ملکی انجینئرز اور پروگرامر کو موقع ملتا ہے۔ کسی نے اس پر ابھی تک کوئی جواب نہیں دیا ہے۔ اس طرح کے اقدامات سے ہندوستانی کارکنوں پر اثر پڑے گا جنہیں ہر سال سب سے زیادہ ایچ -1 ویزا جاری کیا جاتا ہے۔

ٹرمپ نے ویزا پروگرام کا جائزہ لینے کے احکامات دئے

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز