عیسائی ، یہودی اور مسلمان ایک ساتھ آجائیں ، تو دہشت گردی کا قلع قمع کرسکتے ہیں : ڈونالڈ ٹرمپ ، ایران پر بھی سادھا نشانہ

May 21, 2017 08:58 PM IST | Updated on: May 21, 2017 08:58 PM IST

ریاض : امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ اپنے سعودی عرب کے دورے کے موقع پر اتوار کو تقریباً پچاس عرب اور مسلم ممالک کے لیڈروں کے اجتماع سے خطاب کیا ۔اپنے خطاب کے دوران انہوں نے دہشت گردی کے اوپر سب سے زیادہ زور دیا۔ انہوں نے کہا کہ اگر عیسائی ، یہودی اور مسلمان ایک ساتھ آجائیں ، تو دہشت گردی کا قلع قمع کرسکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ یہ مختلف عقیدوں ، مختلف فرقوں یا مختلف تہذیبوں کے درمیان جنگ نہیں ہے بلکہ یہ سفاک مجرموں اور تمام ادیان کے ماننے والے مہذب لوگوں کے درمیان جنگ ہیں اور یہ مہذب لوگ اپنا تحفظ چاہتے ہیں۔ یہ برائی اور اچھائی کے درمیان جنگ ہے‘‘۔

امریکی صدر نے کہا کہ دہشت گردی دنیا بھر میں پھیل چکی ہے ، لیکن امن کا راستہ یہاں اس قدیم اور مقدس سرزمین سے نکلتا ہے۔ امریکہ مشترکہ مفادات اور سلامتی کے حصول کے لیے آپ کے ساتھ کھڑا ہونے کو تیار ہے، لیکن مشرق وسطیٰ کی اقوام کو اس دشمن کو کچلنے کے لیے امریکی طاقت کا انتظار نہیں کرنا چاہیے۔ان اقوام کو خود فیصلہ کرنا ہوگا کہ وہ اپنے لیے ، اپنے ملکوں اور اپنے بچوں کے لیے کیا مستقبل چاہتے ہیں ۔

عیسائی ، یہودی اور مسلمان ایک ساتھ آجائیں ، تو دہشت گردی کا قلع قمع کرسکتے ہیں : ڈونالڈ ٹرمپ ، ایران پر بھی سادھا نشانہ

اپنی تقریر کےد وران امریکی صدر نے ایران پر بھی نشانہ سادھا ۔ انہوں نے کہا کہ خطہ میں عدم استحکام کیلئے ایران ذمہ دار ہیں ۔ ٹرمپ نے کہا کہ ایران کی حمایت سے ہی بشار الاسد نے ناقابل بیان جرائم کا ارتکاب کیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز