چین میں شدید زلزلہ، 13 لوگوں کی موت، 175 زخمی

Aug 09, 2017 03:54 PM IST | Updated on: Aug 09, 2017 03:54 PM IST

بیجنگ۔  چین کے جنوب مغرب میں واقع دوردراز پہاڑی سیچوآن صوبے میں کل آنے والے زبردست زلزلے میں چھ سیاحوں سمیت 13 لوگوں کی موت ہو گئی اور 175 دیگر زخمی ہوئے ہیں۔ صوبائی حکومت اور سرکاری میڈیا نے آج بتایا کہ ریختر پیمانے پر 7.0 کی شدت والے اس زلزلے میں چھ سیاحوں سمیت 13 افراد ہلاک ہو گئے اور 175 زخمی ہوئے ہیں جن میں سے 30 کی حالت نازک ہے۔ زلزلے کی وجہ سے زبردست تودے گرنے کی وجہ سے 100 سے زائد سیاح پھنسے ہوئے ہیں۔

امریکی محکمہ ارضیاتی سروے نے بتایا کہ زلزلے کا مرکز گوانگيان صوبے سے 200 کلومیٹر شمال مغرب میں سطح سے 10 کلومیٹر نیچے تھا۔ یہ مقام مشہور سیاحتی مقام زنجیانگ نیچر ریزرو کے پاس ہے۔ اس سے پہلے زلزلے کی شدت 6.6 بتائی گئی تھی۔ سرکاری خبر رساں ایجنسی شنهوا نے صوبائی انتظامیہ کے حوالے سے بتایا کہ زلزلے کے خطرات کو دیکھتے ہوئے 31500 سیاحوں کو محفوظ مقامات پر پہنچایا گیا ہے۔ زلزلے کی وجہ سے ایک ہوٹل کی چھت گر جانے سے بڑی تعداد میں لوگ پھنس گئے تھے جن میں سے تقریبا 2800 لوگوں کو محفوظ نکال لیا گیا ہے۔ مہلوک سیاحوں کی شہریت کا اب تک پتہ نہیں چل سکا ہے۔ زنجیانگ غیر ملکی سیاحوں کے مقابلے میں چین کے سیاحوں کے درمیان زیادہ مقبول ہے۔

چین میں شدید زلزلہ، 13 لوگوں کی موت، 175 زخمی

سیچوآن زلزلہ انتظامیہ نے بتایا کہ آج صبح بھی کئی جھٹکے محسوس کئے گئے۔

ملک کے مغربی صوبے شنجيانگ میں بھی قزاخستان سرحد کے قریب آج صبح 6.6 شدت والے زلزلے کے زبردست جھٹکے محسوس کئے گئے۔ زلزلے کا مرکز زنگے کاؤنٹی میں ين انگ شہر سے 137 کلومیٹر شمال مشرق میں واقع تھا۔ اس شہر میں پانچ لاکھ سے بھی زیادہ آبادی رہتی ہے۔ اس سے پہلے زلزلے کی شدت 6.5 بتائی گئی تھی۔ اس زلزلے کی وجہ سے کسی جانی نقصان کی اطلاع نہیں ہے۔ سیچوآن کی حکومت نے اپنے سوشل میڈیا ویب سائٹ پر بتایا ہے کہ زيوز ایگومیں فی الحال 38 ہزار سے زائد سیاحوں پہنچے ہوئے ہیں۔ صوبائی دارالحکومت چینگدو اور شيان میں بھی زبردست جھٹکے محسوس کئے گئے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز