مکل رائے دور کے اختتام کے بعد اب درگا پوجا کے بعد ترنمول کانگریس کی ہوگی تنظیم نو

Sep 27, 2017 06:42 PM IST | Updated on: Sep 27, 2017 06:42 PM IST

کلکتہ: ترنمول کانگریس سے مکل رائے کا دور ختم ہونے کے بعد پارٹی اپنی تنظیمی قوت کو از سر نومرتب کرنے میں مصروف ہوگئی ہے۔پارٹی کے مستقبل کے پروگرام کو چلانے کیلئے دو کمیٹیاں بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ایک کمیٹی کو بنگال کے معاملات دیکھنے کی ذمہ داری دی جائے گی اور دوسری کمیٹی کو قومی سطح کی سیاست پر توجہ مرکوز کرنے کی ذمہ داری دی جائے گی۔ پارٹی کی تنظیم نو درگا پوجا کے بعد کیا جائے گا۔پارٹی کے ایک سینئر لیڈر و ریاستی وزیر کے مطابق ممبر پارلیمنٹ سدیپ بندو پادھیائے اور ڈیریک اوبرائن کو جو بالترتیب لوک سبھا اور راجیہ سبھا کے رکن ہیں، قومی سطح کے امور بشمول پارلیمنٹ کے فلور پارٹی کی حکمت عملی اور قومی و علاقائی جماعتوں سے تعلقات سے متعلق پالیسی مرتب کرنے کی ذمہ داری دی گئی۔

بنگال میں پارٹی کی تنظیم کی ذمہ داری ترنمول کانگریس کے جنرل سیکریٹری سبرتو بخشی کو دی گئی ہے جو بنگال میں پارٹی کے پروگرام مرتب کرنے کے علاوہ مقامی و زمینی سطح پر پارٹی کی آرگنائزیشن کی ذمہ داریاں سنبھالیں گے اور اس کے علاوہ عوامی نمائندگان کے ساتھ کوآرڈی نیٹ بھی کریں گے۔ تاہم ترنمول کانگریس میں یہ بات تسلیم کی جارہی ہے مکل رائے پارٹی کو قومی اور ریاستی دونوں سطح پر تنہا سنبھال رہے تھے۔پارٹی کو ان کی عدم موجودگی کا ضرور احساس ہوگا۔

مکل رائے دور کے اختتام کے بعد اب درگا پوجا کے بعد ترنمول کانگریس کی ہوگی تنظیم نو

ترنمول سربراہ ممتا بنرجی ۔ فائل فوٹو

ممتا بنرجی کے کابینہ کے سینئر وزیر نے کہا کہ مکل رائے نے قومی سطح پر اور بنگال میں پارٹی کے آرگنائزیشن کو ایک مدت تک سنبھالا ہے اور انہوں نے طاقت کا لطف بھی اٹھایا ہے ۔تاہم اب ممتا بنرجی کے علاوہ کوئی بھی لیڈر ذاتی طور پر اقتدار کا لطف نہیں اٹھا سکتا ہے ۔ اس کے علاوہ چار پانچ ممبروں پر مشتمل ایک نگراں کمیٹی بھی بنائی جائے گی جو ان دونوں کمیٹی کے کام کاج اور طریقہ کار پر نظر رکھے گی ۔اس کمیٹی میں پارٹی کے سیکریٹری جنرل و ریاستی وزیر تعلیم پارتھو چٹرجی،پنچایتی راج کے وزیر سبرتو مکھرجی اور لوک سبھا کے ممبر پارلیمنٹ کلیان بنرجی شامل ہوں گے۔

جب ٹریڈ یونین کی ذمہ داری ریاستی وزیر محنت ملئے کھٹک، ریاستی وزیر بورندو بوس اور راجیہ سبھا کی رکن ڈولا سین جب کہ اقلیتی امور کی ذمہ داری ریاستی وزیر شہری ترقیات فرہاد حکیم اور لوک سبھا کے ممبر ادریس کو سونپی جائے گی۔اس کے علاوہ تمام منتخب عوامی نمائندوں کو ہدایت دی ہے کہ وہ پارٹی آرگنائزیشن کی مدد کریں اور عوام کے درمیان وقت گزاریں اور اندرونی اختلافات سے گریز کریں ۔پارٹی کا ماننا ہے کہ مکل رائے کے نکلنے کے بعد ان کے وفادار پارٹی آرگنائزیشن کو نقصان پہنچا سکتے ہیں ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز