ممنوعہ جماعت انصار اللہ بنگلا سے تعلق رکھنے کے الزام میں آفتاب نیپال سرحد کے قریب سے گرفتار

کلکتہ پولیس کی اسپیشل ٹاسک فورسیس نے ہندو نیپال سرحد کے قریب سے بنگلہ دیش کی ممنوعہ انتہا پسند جماعت سے تعلق رکھنے کے الزام میں ایک شخص گرفتار کیا گیا ہے

Nov 29, 2017 09:44 PM IST | Updated on: Nov 29, 2017 09:44 PM IST

کلکتہ: کلکتہ پولیس کی اسپیشل ٹاسک فورسیس نے ہندو نیپال سرحد کے قریب سے بنگلہ دیش کی ممنوعہ انتہا پسند جماعت سے تعلق رکھنے کے الزام میں ایک شخص گرفتار کیا گیا ہے ۔انصار اللہ بنگلا ٹیم کے اب تک مبینہ 5ممبران گرفتار کیے جاچکے ہیں ۔ سینئر پولس آفیسر نے بتایا کہ عمر فاروق عرف محمد آفتاب احمد کو ایس ٹی ایف نے نیپال سرحد کے قریب سے گرفتار کیا ہے ۔یہ پڑوسی ملک فرار ہونے کی کوشش کررہے تھے ۔

اس سے قبل ایس ٹی ایف نے عمرفاروق اور دیگر دو افراد شوپن بسواس عرف تمیم نیان غازی عرف ظفر کی خبر دینے پر انعام دینے کا اعلان کیا ہے ۔عمر فاروق خان کی گرفتار ی کے ساتھ ہی انصار اللہ بنگلا ٹیم کے گرفتار ممبروں کی تعداد 5ہوگئی ہے ۔چار افراد کی گرفتاری کے بعد خفیہ رپورٹ کی بنیاد پر کلکتہ پولس کی ایک ٹیم ہندو نیپال سرحد کے قریب چھاپہ مارکر آفتاب کو گرفتار کیا ۔کلکتہ پولس کے ذرائع کے مطابق آفتا ب ہندوستان میں دھماکہ خیز اشیاء کو جمع کرنے کی تیاری میں مصروف تھا ۔

ممنوعہ جماعت انصار اللہ بنگلا سے تعلق رکھنے کے الزام میں آفتاب نیپال سرحد کے قریب سے گرفتار

علامتی تصویر

آفتاب ہندوستان میں محمد شہادت حسین کے تعاون سے داخل ہوا تھا۔شہادت حسین کو کلکتہ سے گزشتہ ہفتے گرفتار کیا گیاتھا ۔افسر نے بتایا کہ آفتاب تمیم کے ساتھ ہوڑہ کے ایک ہوٹل میں کئی دنوں تک قیام کیا تھا ۔ایس ٹی ایف نے گزشتہ انصار اللہ بنگلاٹیم کے دو مبینہ رکن شمشاد میاں اور رضا ء الاسلام کو ہتھیار ڈیلر مونوتوش دے کے ساتھ کلکتہ ریلوے اسٹیشن سے گرفتار کیا گیا تھا۔ان کے پاس سے کئی جعلی دستاویز بھی برآمد کیا گیا تھا۔پولس کے مطابق یہ دہشت گرد بنگلہ دیش میں سیکولر بلاگرس اور رائٹرس کو قتل کرنے کا منصوبہ بنارہے تھے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز