جے ڈی یو لیڈر اسلم آزاد نے بہار اردو اکیڈمی پر بدعنوانی کا الزام عائد کیا

Oct 21, 2017 07:54 PM IST | Updated on: Oct 21, 2017 07:54 PM IST

 پٹنہ۔  بہار اردو اکیڈمی ایک بار پھر سے سرخیوں میں ہے۔ جے ڈی یو لیڈر پروفیسر اسلم آزاد نے اکیڈمی پرایک سنگین الزام لگایا ہے۔ اسلم آزاد کے مطابق اکیڈمی میں کئی سطح پر بدعنوانی ہو رہی ہے جس کی جانچ ہونی چاہئے ۔ ادھر بی جے پی نے اکیڈمی کا بچاؤ کیا ہے جبکہ اکیڈمی کے سکریٹری نے دعویٰ کیا ہے کہ وہ سبھی طرح کی جانچ کے لئے تیار ہیں۔

بہار اردو اکیڈمی کی ایک منفرد تاریخ رہی ہے۔ اکیڈمی صوبہ میں اردو زبان و ادب کی ترویج و اشاعت کے لئے ہمیشہ سرگرم  رہی ہے لیکن وقت وقت پہ اکیڈمی کے کاموں پر سوال بھی کھڑے ہوتے رہے ہیں۔ جے ڈی یو لیڈر اسلم آزاد نے اکیڈمی میں بدعنوانی کا الزام لگاتے ہوئے کہا ہے کہ اکیڈمی کے سبھی پروگراموں میں کچھ خاص لوگوں کو ہی بلایا جاتا ہے۔ آزاد نے اکیڈمی کو تحلیل کر جانچ کرانے کا مطالبہ کیا ہے۔ جے ڈی یو لیڈر اسلم آزاد کے مطابق وہ اس معاملے پر جلد ہی وزیر اعلیٰ سے ملاقات کریں گے۔ ادھر بی جے پی نے اکیڈمی کا بچاؤ کیا ہے۔ بی جے پی ترجمان اظفر شمسی کے مطابق اکیڈمی اردو کے فروغ کا کام کررہی ہے۔ شمسی نے یہ بھی کہا کہ اگر کچھ معاملہ ہوا ہے تو حکومت اس کی جانچ کرائےگی۔ اس معاملے میں اکیڈمی کے سکریٹری نے دعویٰ کیا ہے کہ وہ سبھی طرح کی جانچ کے لئے تیار ہیں۔ سکریٹری کے مطابق اکیڈمی میں کسی طرح کی کوئی بدعنوانی نہیں ہے وہ اپنا کام کررہے ہیں اور کوئی بھی اکیڈمی میں آکر ان کے کاموں کا جائزہ لے سکتا ہے۔

جے ڈی یو لیڈر اسلم آزاد نے بہار اردو اکیڈمی پر بدعنوانی کا الزام عائد کیا

اردو کے فروغ کے نام پر قائم یہ ادارہ اس سے پہلے بھی سیاست کا شکار بنا ہے۔ خاص بات یہ ہیکہ اردو اداروں پر سیاست خود اردو والوں کی جانب سے کی جاتی ہے نتیجہ کے طور پر اردو کے فروغ کا نشانہ اکیڈمی کبھی حاصل نہیں کرپاتی ہے۔ بہر حال، اب یہ دیکھنا دلچسپ ہوگا کہ یہ تازہ معاملہ وزیر اعلیٰ کے دربار  میں کس شکل میں پہنچتا ہے اور اس سلسلے میں کیا کارروائی ہوتی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز