صرف ایک لوک سبھا کی سیٹ کیلئے بنگال کو تقسیم کرنے کی سازش کررہی ہے بی جے پی : ممتا بنرجی

Oct 16, 2017 10:46 PM IST | Updated on: Oct 16, 2017 10:46 PM IST

کلکتہ: مغربی بنگال کی وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے آج وزیر اعظم نریندر مودی اور مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کو خط لکھ کر درخواست کی ہے کہ دارجلنگ جہاں علاحدہ ریاست کیلئے تحریک چل رہی ہے، سے مرکزی فورسیس کو نہیں ہٹایا جائے ۔اس کے ساتھ ہی وزیر اعلیٰ نے دارجلنگ پر آل پارٹی میٹنگ کو مثبت قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ خوشگوار ماحول میں دارجلنگ میں امن کے قیام کی راہ تلاشی گئی ہے۔

ریاستی سیکریٹریٹ نوبنو میں دارجلنگ میں تیسری آل پارٹی میٹنگ کرنے کے بعد وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ اگر دارجلنگ میں حالات خراب ہوں گے تو اس کی ذمہ داری مرکزی حکومت کی ہوگی۔انہوں نے کہا کہ مرکزی نیم فورسیس کو ہٹانے کا فیصلہ میرے خیال سے مرکزی حکومت کا نہیں ہے بلکہ بی جے پی لیڈروں کے کہنے پر کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایک ایسے وقت میں جب دارجلنگ میں حالات بہتر ہورہے ہیں تو مرکز ی حکومت نے مرکزی نیم فورسیس کی 7 کمپنیوں کو واپس بلانے کا غیر ذمہ دارانہ فیصلہ کیا ہے ۔

صرف ایک لوک سبھا کی سیٹ کیلئے بنگال کو تقسیم کرنے کی سازش کررہی ہے بی جے پی : ممتا بنرجی

مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی: فائل فوٹو

وزیر اعلیٰ نے دارجلنگ مغربی بنگال کا اٹوٹ حصہ ہے اور وہاں حالات کو معمول پر لانے کیلئے ہم ہر ممکن کوشش کی جارہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ قیام امن اور ترقیاتی کاموں کے ذریعہ عوام کو عوامی دھارے میں شامل کیا جائے گا۔ممتا بنرجی نے کہا کہ بی جے پی اقتدار کی سازش کررہی ہے اور ایک لوک سبھا کی سیٹ کیلئے بنگال کو تقسیم کیا جارہا ہے ۔8جون2018کو دارجلنگ میں حالات خراب ہونے کے بعد سی آر پی ایف کی12کمپنیاں اور ایس ایس بی کی تین کمپنیوں کودارجلنگ میں تعینات کیا گیا تھا۔

خیال رہے کہ دو دن قبل ہی گورکھا جن مکتی مورچہ نے مرکزی وزارت داخلہ کو خط لکھ کر کہا تھا کہ ممتا بنرجی کی قیادت والی حکومت مرکزی فورسیس کا غلط استعمال کررہی ہے اور مورچہ کے صدر بمل سنگھ گورنگ کے خلاف سازش کی جارہی ہے اس لیے دارجلنگ سے مرکزی فورسیس کو فوری واپس بلایا جائے ۔اس کے بعدہی مرکزی وزارت داخلہ کے مرکزی نیم فورسیس کو ہٹانے کا فیصلہ سامنے آیا ہے ۔مرکزی وزارت داخلہ نے کل ہی ریاست محکمہ داخلہ کو بتلایا کہ مرکزی فورسیس کی 10کمپنیاں جس میں (7سی آر پی ایف اور تین ایس ایس بی)جو دارجلنگ اور کالمپونگ میں تعینات ہیں کو ہٹایا جارہا ہے اور اس فیصلے کا اطلاق 16اکتوبرسے ہوگا۔جب کہ سی آرپی ایس کی پانچ کمپنیاں دارجلنگ میں موجود رہیں گی اور دیگر مرکزی ایجنسیاں 20اکتوبر تک رہیں گی ۔

ممتا بنرجی نے کہا کہ میں نے راج ناتھ سنگھ سے فون پر بات چیت کی ہے اور اس کے بعد وزیر اعظم اور وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کو خط لکھ کرد رخواست کی ہے کہ مرکز ی نیم فورسیس کو اس وقت دارجلنگ سے و اپس نہیں بلایا جائے ۔ دارجلنگ میں تیسری آل پارٹی میٹنگ کو مثبت قرار دیتے ہوئے وزیراعلیٰ نے کہا کہ یہ میٹنگ بہت ہی زیادہ مثبت اور تعمیری تھا اور ہر ایک نے میٹنگ میں حصہ لیا ۔وزیر اعلیٰ نے کہا کہ دارجلنگ میں حالات معمول پر ہیں اور چوتھی میٹنگ سلی گوڑی کے پین تیل گاؤں میں ہوگی ۔ممتا بنرجی نے کہاکہ ان کی حکومت ان خاندان اور افراد کی مدد کرے گی جن کے رشتہ دار کی ہڑتال میں موت ہوئی ہے یا پھر زخمی ہوئے ہیں ۔کسی بھی سرکاری ملازم کو ملازمت کو برطرف نہیں کیا جائے گا ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز