جامعۃ القاسم دارالعلوم الاسلامیہ کی نگرانی میں سیلاب زدگان کی مدد اور بازآبادکاری کے لیے کوششیں جاری : مفتی محفوظ الرحمن عثمانی

Sep 11, 2017 07:08 PM IST | Updated on: Sep 11, 2017 07:08 PM IST

سپول: بہار کی مشہور دینی درسگاہ جامعۃ القاسم دارالعلوم الاسلامیہ سپول میں آج شمالی بہار کے سیلاب سے متاثرلوگوںمیں فوڈ پیک تقسیم کیے گیے ۔اس پیک میں مردو خواتین اور بچوں کے کپڑے اور کھانے کی اشیاء جن میں چاول ،چورا،سوزی ،مصالحہ ،تیل اور چینی وغیرہ شامل تھے تقسیم کیے گئے۔

بہار کا یہ وہ علاقہجہاں سیلاب نے بڑی تباہی مچائی تھی،دیکھتے ہی دیکھتےسیکڑوں گاؤں زیر آب ہو گئے،سڑکیں اور پل بہہ گئے اور ہزاروں افرادکھلے آسمان کے نیچے سڑکوں پر آگئے۔بہت سے افراد لقمہ اجل بن گئے۔کئی خاندان جو خوشحال تھے وہ مجبور و محتاج اور بے یارو مددگار ہو گئے ۔دوسروں کی مدد کرنے والے خود مدد کے طلب گار ہو گئے۔10   اگست کو آئے سیلاب کی زد میں ریاست کے 18 اضلاع تھے،جہاںکی تقریباً سوا کروڑ آبادی اس سے متاثر ہوئی ۔ سیلاب نے سب سے زیادہ تباہی سیمانچل کے ارریہ ، کشن گنج ، پورنیہ ، کٹیہار اور کشن گنج میں مچائی ، یہ علاقے کثیر مسلم آبادی والے ہیں،اس لیے سب سے پہلے ملی اداروں نے اس طرف توجہ دی ۔

جامعۃ القاسم دارالعلوم الاسلامیہ کی نگرانی میں سیلاب زدگان کی مدد اور بازآبادکاری کے لیے کوششیں جاری : مفتی محفوظ الرحمن عثمانی

ملی اداروں کی طرف سے مسلسل راحتی کیمپ چلائے گئے اور لوگوں کی مدد کا یہ سلسلہ جا رہی ہے۔جامعۃ القاسم دارالعلوم الاسلامیہ کی نگرانی میں امام قاسم اسلامک ایجوکیشنل ویلفئر ٹرسٹ انڈیا اور خدمت خلق ٹرسٹ انڈیا کے ذریعہ تقریبا ایک ماہ سےسیلاب زدگان کی راحت رسانی کی کوشش کی جا رہی ہے،ان کی مدد اور بازآبادکاری کے لیے صاحب ثروت سے دردمندانہ اپیل کی گئی ہے۔

علاقے کے سیلاب سے متاثرہ افراد میں کھانے پینے کے پیک تقسیم کرتے ہوئے معروف عالم دین اور جامعۃ القاسم دارالعلوم الاسلامیہ کے بانی و مہتمم مفتی محفوظ الرحمن عثمانی نے کہا کہ عوام کوراحت پہنچانا حکومتوں کی ذمہ داری ہے ،لیکن جس انداز میں یہ کام کیا جارہاہے اس سے لوگ ناواقف نہیں ہیں۔انہوں نے کہاکہ سیلاب میں گھرے لوگوںکے تعلق سے جو رپورٹیں آ ئیں ہیں وہ تسلی بخش نہیں کہی جاسکتیں۔اگر دینی و ملی ادارے بر وقت پر اپنادست تعاون نہیں پیش کرتے توتباہی و بربادی کے بھیانک مناظر دیکھنے کو ملتے۔انہوں نےکہا کہ پریشانی کے اس عالم میں جو کچھ ہم لوگوں نے کیا اور جو کچھ کچھ بھی کرپارہے ہیں اللہ تبارک انہیں قبولیت بخشے اور ماجور فرمائے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز