تین سو مقدموں کے بوجھ کے ساتھ کام کررہا ہے بہار کا سنی وقف بورڈ

Oct 09, 2017 05:44 PM IST | Updated on: Oct 09, 2017 05:44 PM IST

پٹنہ ۔ تقریبا تین سو چھوٹے اور بڑے مقدمہ میں الجھا بہارکی سنی وقف بورڈ غریب اور ضرورت مندوں کی مدد کرپانے سے قاصر رہ جاتا ہے۔ بورڈ کی انتظامیہ نے ای ٹی وی سے بات کر اپنی مشکلوں کو عوام کے سامنے رکھا ہے۔  بہار میں وقف بورڈ کی ہزاروں کروڑ کی مالیت ہے لیکن اس مالیت کا بڑا حصہ آج بھی زمین مافیاؤں کے چنگل میں پھنسا ہے۔ حکومت کی جانب سے وقف آراضی کی تحفظ کی بارہا یقین دہانی کرائی گئ ہے ، باوجود اسکے وقف بورڈ کا یہ مسئلہ برقرار ہے۔ غورطلب ہے کہ بورڈ کے چیئرمین نے خاص طور سے لالو پرساد کی ذات یادو پر وقف آراضی کو قبضہ کرنے کا الزام لگایا ہے۔

یہ پہلا موقع ہے جب وقف بورڈ نے تھک ہار کر کسی ذات کا نام لیا ہے۔ بورڈ کے سی ای او کے مطابق وہ لوگوں کی فلاح کا کام کرنا چاہتے ہیں لیکن تین سو مقدموں کا دباؤ بورڈ کو بہت کچھ کرنے کا موقع فراہم نہیں کرتا ہے۔ تین سو مقدمہ کا بوجھ کوئی معمولی دباؤ نہیں ہے۔ بورڈ کی پوری طاقت اور زیادہ تر رقم عدالتی کاروائی میں خرچ ہوتی ہے۔ ظاہر ہے جب تک حکومت کی جانب سے وقف بورڈ کو مکمل تعاون نہیں ملتا ہے اس وقت تک ہزاروں کروڑ کی مالیت سے بھی غریب اقلیت کو کوئی فائدہ نہیں ہوسکتا ہے۔

تین سو مقدموں کے بوجھ کے ساتھ کام کررہا ہے بہار کا سنی وقف بورڈ

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز