گائے کے گوشت پر پابندی لگائے جانے کے معاملے پر ممتا بنرجی نے کہی یہ بڑی بات

Apr 13, 2017 08:36 AM IST | Updated on: Apr 13, 2017 08:36 AM IST

مرشد آباد۔ مغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتا بنرجی نے کہا ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) ریاست میں فرقہ وارانہ کشیدگی کو فروغ دینے کی کوشش کر رہی ہے۔ محترمہ بنرجی نے کل مرشدآباد میں ایک جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ"پہلے انہیں بنگال کی ثقافت کو سیکھ لینے دو اور اس کے بعد ریاست کے بارے میں جواب دینے دو۔ میں درگا پوجا، عید اور چرچ کی عبادت میں حصہ لیتی ہوں۔ آپ مجھے روکنے والے کون هوتے ہیں۔ یہ ماں، مٹی اور مانس کی سرزمین ہے اور ہمیں کوئی تقسیم نہیں کر سکتا ہے اور ہم سر نہیں جھكائیں گے"۔ انہوں نے کہاکہ "ریاست کی ثقافت سندور کھیلنا ہے، تلوار کھیلنا نہیں جیساکہ دہلی کے کچھ بابوؤں نے شر وعات کی ہے"۔

محترمہ بنرجی نے گائے کے گوشت پر پابندی لگائے جانے کے معاملے پر کہا کہ "کیا تم لوگ کھانے کے لئے مچھلی کو نہیں مارتے ہو، کیا کھانے کے لئے پودوں كو نہیں مارا جاتا ہے تو پھر گوشت کھائے جانے کی اس قدر مخالفت کیوں ہورہی ہے۔ لوگوں کو کیا کھانا ہے، کیا پہننا ہے، اس کا فیصلہ انہیں ہی کرنے دو"۔ محترمہ بنرجی نے کہا کہ وہ ماں، مٹی اور مانس کے لئے جوابدہ ہیں اور ثقافت کی سیاست میں یقین کرتی ہیں۔ بنگال بین مذہبی رواداری میں یقین کرتی ہے اور ریاستی حکومت تمام نسلوں، مذاہب اور فرقوں کے لئے کام کرتی ہے۔

گائے کے گوشت پر پابندی لگائے جانے کے معاملے پر ممتا بنرجی نے کہی یہ بڑی بات

گیٹی امیجیز

انہوں نے لوگوں کو خبردار کرتے ہوئے کہا کہ کچھ لوگ سوشل میڈیا پر پروپیگنڈہ کر رہے ہیں اور ان کی منشا فرقہ وارانہ کشیدگی کو بڑھانا ہے۔ لوگوں کو ایسے شر پسندوں کی افواہوں اور پروپیگنڈے سے چوکنا رہنے کی ضرورت ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز