ممتا بنرجی نے مسلم وزیر کو بنایا مندر ترقیاتی بورڈ کا صدر، بی جے پی چراغ پا ، سبرامنیم سوامی نے دیا الٹی میٹم

Jun 21, 2017 09:16 PM IST | Updated on: Jun 21, 2017 09:16 PM IST

کولکاتہ : مغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتا بنرجی کے ایک فیصلہ پر تنازعہ کھڑا ہو گیا ہے۔ وزیر اعلی ممتا بنرجی نے ریاست کے ہگلی ضلع میں بنے مشہور تاركیشور مندر ترقیاتی بورڈ کا صدر اپنے وزیر فرہاد حکیم کو بنایا ہے ۔ بی جے پی نے ممتا بنرجی کے اس فیصلے پر سوال کھڑا کیا ہے۔ بی جے پی کا کہنا ہے کہ ہندوؤں کے عقیدے کی علامت مندر کے ترقیاتی بورڈ کا صدر ایک مسلمان کو بنایا جانا غلط ہے۔

ادھر بی جے پی لیڈر سبرامنیم سوامی نے ممتا بنرجی پر مندر کی ترقی کے بدلے آس پاس کی زمینوں پر قبضہ کرنے کا الزام لگایا ہے۔ سبرامنیم سوامی نے کہا کہ تاركیشور مندر کو لے کر سرکاری حکم غیر قانونی ہے ، حکومت نے مندر کے ارد گرد کے ڈیولپمنٹ کے لئے ایک بورڈ بنایا اور اس پر ایک مسلمان وزیر کو بیٹھا دیا ہے۔

ممتا بنرجی نے مسلم وزیر کو بنایا مندر ترقیاتی بورڈ کا صدر، بی جے پی چراغ پا ، سبرامنیم سوامی نے دیا الٹی میٹم

ساتھ ہی ساتھ اب حکومت کہہ رہی ہے کہ یہ بورڈ مندر کے ڈیولپمنٹ کو لے کر بھی ہے ، جو کہ غیر قانونی ہے۔ سوامی نے ممتا حکومت پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ مندر کے ارد گرد کے ڈیولپمنٹ کے بہانے مندر پر قبضہ کرنے کی کوشش ہو رہی ہے۔

سوامی نے آئین کی دفعہ 26 کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ یہ سرکاری حکم غیر قانونی ہے۔ میں نے حکومت کو 48 گھنٹے میں حکم واپس لینے کا الٹی میٹم دیا تھا۔ 48 گھنٹے ختم ہونے کے بعد میں کولکاتہ ہائی کورٹ میں اس کے خلاف کیس دائر کروں گا، ہم مندر کو بچانے کے لئے کچھ بھی کریں گے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز