لالو یادو کے بیٹے تیج پرتاپ کے پٹرول پمپ کا لائسنس منسوخ ، تیجسوی یادو نے بتایا یکطرفہ کارروائی

Jun 17, 2017 05:15 PM IST | Updated on: Jun 17, 2017 05:15 PM IST

پٹنہ : بھارت پٹرولیم کارپوریشن لمیٹڈ نے بہار کے وزیر صحت تیج پرتاپ یادو کے پٹرول پمپ کا لائسنس منسوخ کر دیا ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ لائسنس حاصل کرنے کیلئے بی پی سی ایل نے تیج پرتاپ کو ایک نوٹس بھیجا تھا ، جس کا وہ مناسب جواب نہیں دے سکے، جس کی وجہ سے یہ قدم اٹھایا گیا ہے۔ اس سلسلہ میں بی پی سی ایل نے تبصرہ کرنے سے انکار کر دیا ہے۔

بی پی سی ایل نے 31 مئی کو تیج پرتاپ کو نوٹس بھیجا تھا اور اس سلسلے میں جواب طلب کیا تھا کہ انہوں نے لائسنس کس طرح حاصل کیا۔ ان سے 15 دنوں میں جواب داخل کرنے کیلئے کہا گیا تھا۔

لالو یادو کے بیٹے تیج پرتاپ کے پٹرول پمپ کا لائسنس منسوخ ، تیجسوی یادو نے بتایا یکطرفہ کارروائی

FILE PHOTO

ادھر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے تیج پرتاپ کے بھائی اور بہار کے نائب وزیر اعلی تیجسوی یادو نے کہا کہ وہ اس سلسلے میں جلد ہی مزید معلومات حاصل کریں گے۔ ساتھ ہی انہوں نے سوال اٹھایا کہ اس معاملہ پر یکطرفہ کارروائی کیوں ہو رہی ہے؟ انہوں نے کہا کہ سچ جلد ہی سامنے آئے گا۔

اے این آئی کی خبر کے مطابق بی پی سی ایل کے پٹنہ کے ٹریٹری مینیجر منیش کمار کی طرف سے یہ نوٹس ایک شکایت کے بعد بھیجا گیا تھا ، جس میں کہا گیا تھا کہ پٹنہ کے مصروف انیس آباد بائی پاس روڈ پر یہ پٹرول پمپ یادو نے غلط معلومات کے ذریعے حاصل کیا ہے۔

خیال رہے کہ گزشتہ دنوں بی جے پی لیڈر سشیل مودی نے بھی الزام لگایا تھا کہ یو پی اے -2 حکومت میں تیج پرتاپ نے یہ پٹرول پمپ جعلی دستاویزات کی مدد سے حاصل کیا تھا۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے بھی الزام لگایا تھا کہ اپلائي کرتے وقت تیج پرتاپ کے پاس پٹرول پمپ کی تعمیر کے لئے طے 43 ڈسمل زمین بھی نہیں تھی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز