فلم پدما وتی تنازع افسوسناک ، سیاسی جماعت کا اظہار رائے کی آزادی ختم کرنے کا منظم منصوبہ : ممتا بنرجی

مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے آج سنجے لیلا بھنسالی کی آنے والی فلم ’’پدما وتی ‘‘ پر جاری تنازع کے درمیان آج کہا ہے کہ یہ تنازع نہ صرف افسوس ناک ہے بلکہ ایک سیاسی جماعت کا اظہار رائے کی آزادی کو ختم کرنے کا منظم منصوبہ ہے ۔

Nov 20, 2017 08:01 PM IST | Updated on: Nov 20, 2017 08:01 PM IST

کلکتہ: مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے آج سنجے لیلا بھنسالی کی آنے والی فلم ’’پدما وتی ‘‘ پر جاری تنازع کے درمیان آج کہا ہے کہ یہ تنازع نہ صرف افسوس ناک ہے بلکہ ایک سیاسی جماعت کا اظہار رائے کی آزادی کو ختم کرنے کا منظم منصوبہ ہے ۔جو سپر ایمرجنسی نافذ کرنے کی مسلسل کوشش کررہی ہے۔وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے ٹوئیٹ کرتے ہوئے بالی ووڈ کی تمام شخصیتوں سے اپیل کی ہے کہ متحد ہوکر اس صورت کے خلاف آواز بلند کریں ۔ممتا بنرجی نے اپنے ٹوئیٹ میں کہا ہے کہ ’’ہم اس سپرایمرجنسی کی مخالفت کرتے ہیں ۔فلم انڈسٹری کی تمام شخصیات کو متحد ہوکر اس کے خلاف آواز بلند کرنے کی ضرورت ہے ۔

سنجے لیلا بھنسالی کی فلم پدماوتی میں دیپیکا پادو کون، شاہد کپور اور رنویر سنگھ نے کام کیا ہے ۔اس فلم کو لے کر راجپوت کمیونیٹی کا سخت اعتراض ہے ان کی ناراضگی اس بات پر ہے کہ اس فلم میں پدما وتی کے کردار پر انگلی اٹھائی گئی ہے اور اس فلم کے ذریعہ راجپوتوں کے جذبات کو مجروح کیا گیا ہے ۔

فلم پدما وتی تنازع افسوسناک ، سیاسی جماعت کا اظہار رائے کی آزادی ختم کرنے کا منظم منصوبہ : ممتا بنرجی

مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی: فائل فوٹو

فلم پروڈیوسر وی کوم 18نے اتوار کو فلم کے نشر ہونے کی تاریخ کو تبدیل کرنے کا اعلان کیا ہے ۔پہلے یہ فلم یکم دسمبر 2017کو ریلیز ہونا تھا ۔فلم ڈائریکٹر سنجے لیلا بھنسالی نے اس فلم پر اٹھائے جارہے تمام الزامات کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ فلم میں کہیں پر بھی متنازع شوٹنگ نہیں کی گئی ہے ۔خیال رہے کہ فلم کی شوٹنگ کے وقت سے ہی سنجے لیلا بھنسالی کو راجپوتوں کی جانب سے مخالفت کا سامنا ہے ۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز