راشٹریہ جنتا دل کو الیکشن کمیشن کا نوٹس ، جواب نہیں دیا تو منسوخ ہوسکتا ہے انتخابی نشان لالٹیں

الیکشن کمیشن نے سال 15-2014 کا حساب کتاب نہ دینے پر راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کو نوٹس جاری کیا ہے اور 20 دن کے اندر اس کا جواب دینے کو کہا ہے۔

Apr 16, 2018 09:09 PM IST | Updated on: Apr 16, 2018 09:09 PM IST

الیکشن کمیشن نے سال 15-2014 کا حساب کتاب نہ دینے پر راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کو نوٹس جاری کیا ہے اور 20 دن کے اندر اس کا جواب دینے کو کہا ہے۔ کمیشن نے کہا کہ جواب نہ ملنے پر پارٹی کا انتخابی نشان منسوخ کیا جا سکتا ہے۔ سپریم کورٹ کی ہدایت کے مطابق ہر پارٹی کو ہر مالی سال کے بعد نئے سال کے 31 اکتوبر تک سالانہ آڈٹ رپورٹ پیش کرنی ہوتی ہے لیکن آر جے ڈی نے 31 اکتوبر 2015 تک سال 2014-15 کے لئے اپنی رپورٹ نہیں پیش کی۔

الیکشن کمیشن نے آج جاری ہونے والی ایک ریلیز میں کہا کہ کمیشن نے آر جے ڈی کو اب تک آٹھ بار یعنی 10 نومبر 2015، 20 جنوری 2016، 26 فروری 2016، 25 مئی 2016، پانچ اکتوبر 2016، 2 جون 2017، 12 جنوری 2018 اور 13 مارچ 2018 کو یاد دہانی کا خط بھیج کر حساب کتاب دینے کو کہا ہے، لیکن پارٹی نے رپورٹ نہیں پیش کی، اس لئے اسے وجہ بتاو نوٹس جاری کیا گیا ہے کہ اس کے خلاف انتخابی نشان 1968 کے پیرا 16 اے کے تحت کیوں نہ کارروائی کی جائے۔

راشٹریہ جنتا دل کو الیکشن کمیشن کا نوٹس ، جواب نہیں دیا تو منسوخ ہوسکتا ہے انتخابی نشان لالٹیں

تیجسوی یادو ۔ فوٹو نیوز 18

کمیشن نے کہا ہے کہ نوٹس ملنے کے 20 دن کے اندر پارٹی اپنی آڈٹ رپورٹ پیش کرے، ورنہ کمیشن اب بغیر کوئی اطلاع دیئے پارٹی کے خلاف کارروائی کر سکتا ہے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز