طویل علالت کے بعد سابق چیف جسٹس آف انڈیا التمش کبیر کا کولکاتہ میں انتقال

Feb 19, 2017 03:28 PM IST | Updated on: Feb 19, 2017 05:35 PM IST

کولکاتہ: ملک کے سابق چیف جسٹس التمش کبیر کا آج صبح کولکاتہ میں انتقال ہو گیا۔ ان کی عمر68 برس تھی۔ جسٹس کبیر طویل عرصے سے بیمار تھے۔وہ ملک کے 39 ویں چیف جسٹس تھے اور 29 ستمبر 2012 کو انہیں سپریم کورٹ کا چیف جسٹس مقرر کیا گیا تھا۔ وہ 292 دنوں تک ملک کے چیف جسٹس کے عہدے پر رہے اور 19 جولائی 2013 کو ریٹائر ہوئے۔ خیال رہے کہ پہلے خبر آئی تھی کہ وہ فی الحال باحیات ہیں اور آئی سی یو ہیں ، مگر بعد میں پھر خبر آئی کہ ان کا انتقال ہوگیا ہے اور انہوں نے آج دوپہر دو بج کر 52 منٹ پر آخری سانس لی۔

جسٹس التمش کبیر نے انسانی حقوق اور انتخابات سے متعلق قوانین پر اہم کردار ادا کیا۔ ان کے اہم مقدموں میں 2011 کے امراوتی ضلع کا سندھیا منوج وانکھڑے کا معاملہ شامل تھا۔ ان کے دیگر اہم مقدموں میں معروف سینئر ایڈوکیٹ اور اس وقت ٹیم انا ہزارکے رکن پرشانت بھوشن پر چلا عدالت کی توہین کا معاملہ بھی شامل ہے۔ مسٹر بھوشن نے الزام لگایا تھا کہ ملک کے 16 سابق چیف جسٹسوں میں سے نصف بدعنوان تھے۔

طویل علالت کے بعد سابق چیف جسٹس آف انڈیا التمش کبیر کا کولکاتہ میں انتقال

اپنی مدت کار کے دوران مسٹر کبیر کئی بار تنازعات اور الزامات سے بھی گھرے رہے۔ گجرات ہائی کورٹ کے سابق چیف جسٹس بھاشكر بھٹاچاريا نےمسٹر کبیر پر انہیں سپریم کورٹ میں آنے سے روکنے کا سنگین الزام لگایا۔ جسٹس کبیر پر اپنے دور اقتدار کے دوران دیگر بنچوں کے لئے درج مقدمات کی سماعت کرنے کے بھی الزامات لگے۔ ان معاملات میں سہارا-سیبی اور سنیل متل 2 جی معاملے شامل تھے۔

ریٹائرمنٹ سے کچھ دن پہلے جناب کبیر کا نام 2013 کا این ای ای ٹی مقدمے کے تنازعات سے بھی شامل کر دیا گیا۔ الزام لگے کہ ان کے اور جسٹس انل دوے کی طرف سے سنائے گئے فیصلے کو پہلے ہی لیک کر دیا گیا۔ تاہم جسٹس کبیر نے فیصلے کے لیک ہونے کے بارے میں کوئی معلومات ہونے سے صاف انکار کیا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز