شہید جوان کے اہل خانہ نے لوٹائی نتیش حکومت کی مدد ،بھائی نے کہا : شرب پی کر نہیں مرا مجاہد خان

Feb 14, 2018 08:49 PM IST | Updated on: Feb 14, 2018 08:49 PM IST

آرا : جموں کے سنجوان فوجی کیمپ پر دہشت گردانہ حملہ میں شہید سی آر پی ایف جوان مجاہد خان کے اہل خانہ نےبہار حکومت کی جانب سے دی جانے والی امدادی رقم ٹھکرادی ہے ۔ مجاہد کی تجہیزو تکفین کے وقت ضلع انتظامیہ کی جانب سے ان کے بھائی امتیاز کو پانچ لاکھ روپے کا چیک دیا گیا تھا ، جسے انہوں نے لوٹادیا۔

شہید جوان کے بھائی امتیاز نے بے حد شکایتی لہجہ میں کہا کہ میرا بھائی شراب پی کر نہیں مرا ہے ، بلکہ شہید ہوا ہے ، ایسے میں اتنی چھوٹی سی سرکاری مدد کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔ امتیاز کے مطابق اس کے اہل خانہ کو ایسی مدد ملنی چاہئے ، جس سے بوڑھے والدین کے ساتھ ساتھ شہید کے کنبہ کی بھی پرورش ہوسکے۔

شہید جوان کے اہل خانہ نے لوٹائی نتیش حکومت کی مدد ،بھائی نے کہا : شرب پی کر نہیں مرا مجاہد خان

خیال رہے کہ بہار میں کسی بھی حادثہ یا آفت میں موت ہونے پر بھی حکومت کی جانب سے متاثرہ کنبہ کو چار لاکھ روپے کی مدد دی جاتی ہے ۔ پیرو کے لعل مجاہد خان دہشت گردوں سے لوہا لیتے ہوئے جموں میں شہید ہوئے تھے ، ایسے میں اس رقم پر کئی لوگوں نے سوال اٹھایا ہے۔

مجاہد خان کو آرا کے پیرو میں بدھ کو سپرد خاک کیا گیا ۔ اس دوران ان کی نماز جنازہ میں کثیر تعداد میں لوگوں نے شرکت کی ۔ مگر جنازہ میں نتیش حکومت کی جانب سے کوئی بھی وزیرشامل نہیں ہوا ، جس کو لے کر بھی سوالات اٹھائے جارہے ہیں۔

آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین کے سربراہ اسد الدین اویسی نے ٹویٹ کرکے سوال کیا کہ بہار کے پیرو ضلع کے رہنے والے سی آر پی ایف کے شہید جوان مجاہد خان کے اہل خانہ سے ملنے نتیش کمار کا ایک بھی وزیر نہیں آیا ۔

اس سے پہلے مجاہد کا جسد خاکی جب منگل کو شام پیرو پہنچا تو وہاں انہیں سلام کرنے کیلئے نوجوانوں کی بھیڑ جمع تھی ۔ ایسا لگ رہا تھا کہ پورا شہر ہی سڑک پر اتر آیا ہے ، جہاں ہاتھوں میں ترنگا لئے سینکڑوں نوجوان مجاہد کی بہادری کے نعرے لگاتے رہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز