کلکتہ ہائی کورٹ کے سابق جج سی ایس كرنن كوئمبٹور سے گرفتار ، سپریم کورٹ کی توہین کا الزام

Jun 21, 2017 01:27 AM IST | Updated on: Jun 21, 2017 01:29 AM IST

کلکتہ ہائی کورٹ کے سابق جج سی ایس كرنن کو آج گرفتار کر لیا گیا ہے ۔ بتایا جا رہا کہ انہیں بنگال سی آئی ڈی نے گرفتار کیا ہے ۔ جسٹس كرن نے 20 ججوں پر بدعنوانی کا الزام لگایا تھا ۔ كرنن پر سپریم کورٹ کی توہین کا الزام ہے ۔ بتایا جا رہا کہ انہیں کوئمبٹور سے گرفتار کیا گیا ہے ۔ جسٹس كرنن 9 مئی سے لاپتہ چل رہے تھے۔

جسٹس كرنن کا تنازعات سے گہرا ناطہ رہا ہے ۔ کولکاتہ ہائی کورٹ میں عہدہ پر رہتے ہوئے جسٹس كرنن کو مارچ 2009 میں مدراس ہائی کورٹ کا ایڈیشنل جج مقرر کیا گیا تھا ۔ اس کے بعد وہ مسلسل ججوں اور سپریم کورٹ کے خلاف اپنے انفرادی بیانات کی وجہ سے خبروں میں رہے ۔  2011 میں انہوں نے الزام عائد کیا کہ ان کے (كرنن کے) دلت ہونے کی وجہ سے انہیں دوسرے ججوں کی طرف سے تشدد کا نشانہ بنایا جاتا رہا ہے ۔

کلکتہ ہائی کورٹ کے سابق جج سی ایس كرنن كوئمبٹور سے گرفتار ، سپریم کورٹ کی توہین کا الزام

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز