دارجلنگ میں گورکھا جن مکتی مورچہ کے کارکنان ہوئے بے قابو ، فوج طلب ، مقامی چینلوں کی نشریات پر روک

Jun 08, 2017 08:13 PM IST | Updated on: Jun 08, 2017 08:13 PM IST

دارجلنگ: مغربی بنگال کے دارجلنگ میں آج وزیر اعلی ممتا بنرجی کی پہلی کابینی میٹنگ کے مقام کے نزدیک گورکھا جن مکتی مورچہ (جی جے ایم) کے کارکنوں نے پولیس کے چار گاڑیوں کو آگ لگا دی اور سلامتی دستوں پر پتھراؤ کیا جنہیں روکنے کے لئے پولیس کو لاٹھی چارج کرنا پڑا اور حالات کے قابو میں نہیں آنے پر آنسو گیس کے گولے بھی داغنے پڑے۔ حالات انتہائی خراب ہوتے ہوئے دیکھ کر فوج کو طلب کرلیا گیا ہے اور علاقہ میں مقامی نیوز چینلوں کی نشریات پر بھی روک لگادی گئی ہے۔

قابل ذکر ہے کہ ممتا بنرجی نے تقریبا 45 سال میں پہلی بار کولکاتہ سے باہر کابینہ کی میٹنگ بلائی تھی ۔ جی جے ایم کے کارکنوں نے چوراہے کے نزدیک بھانو بھون کے نزدیک پرتشدد مظاہرہ کیا اور پولیس کی چار گاڑیوں کو آگ لگا دی۔ مظاہرین نے وہاں لگے بیری کیڈ توڑ کر راج بھون کی طرف جانے کی کوشش کی جہاں وزیر اعلی، تمام کابینی وزیر اورچوٹی کے آئی اے ایس اور آئی پی ایس افسر موجود ہیں۔

دارجلنگ میں گورکھا جن مکتی مورچہ کے کارکنان ہوئے بے قابو ، فوج طلب ، مقامی چینلوں کی نشریات پر روک

مظاہرین دوپہر ساڑھے 12 بجے سے دھرنے پر بیٹھے تھے۔ اس کے بعد وہ راج بھون کی جانب بڑھنے لگے ،جس پر پولیس نے انہیں روکنے کی کوشش کی۔ مظاہرین نے پولیس پر پتھراؤ کرنا شروع کر دیا جنہیں قابو میں کرنے کے لیے پولیس کو لاٹھی چارج کرنا پڑا۔ اس کے بعد بھی جب مظاہرین نہیں مانے تو پولیس کو آنسو گیس کے گولے داغنے پڑے۔

پولیس نے سیکورٹی کے لئے راج بھون کو چاروں طرف سے گھیر لیا ہے۔ تصادموں کی وجہ سے سیاح بھی باہر نظر نہیں آئے۔ جی جے ایم کے حامیوں نے گورکھا کے لئے ایک علیحدہ ریاست کے مطالبہ کے لئے دباؤ بنانے کیلئے ریلی کا انعقاد کیا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز