دھمکیوں سے ڈرنے والا نہیں ہوں ، لالو یادو مقدمہ کرتے ہیں تو سامنا کرنے کیلئے تیار ہوں : سشیل مودی

Jul 06, 2017 07:15 PM IST | Updated on: Jul 06, 2017 07:42 PM IST

پٹنہ: بہار بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) قانون ساز کونسل کے لیڈر سشیل کمار مودی نے راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کے صدر لالو پرساد یادو کے دو دن کے اندر ان کے خلاف ہتک عزت کا مقدمہ دائر کرنے کی دھمکی پر آج کہا کہ چارہ گھوٹالے میں سزا یافتہ ’بدعنوان‘ شخص کورٹ میں ہتک عزت ہونے کا دعوی کس طرح کر سکتا ہے، اگر اس کے باوجود مسٹر یادو مقدمہ کرتے ہیں تو وہ سامنا کرنے کے لئے تیار ہیں۔

مسٹر مودی نے یہاں پریس کانفرنس میں کہا، ’’مجھ پر ہتک عزت کا مقدمہ کرنے کی مسٹر یادو کی دھمکی سے میں ڈرنے والا نہیں ہوں۔ چارہ گھوٹالے میں سزا یافتہ آر جے ڈی صدر کو بدعنوان شخص کہنا کہیں سے بھی غلط نہیں ہوگا۔ یہاں تک کہ عدالت میں بھی میں انہیں بدعنوان شخص ہی بلاؤں گاکیونکہ انہوں نے غلط طریقے سے 1000 کروڑ روپے کی گمنام پراپرٹی حاصل کی ہے۔‘‘انہوں نے کہا کہ وہ پہلے ہی ہتک عزت کے کئی مقدمے جھیل رہے ہیں، اگر ایک اور ہو جائے تو وہ گھبرانے والے نہیں ہیں۔

دھمکیوں سے ڈرنے والا نہیں ہوں ، لالو یادو مقدمہ کرتے ہیں تو سامنا کرنے کیلئے تیار ہوں : سشیل مودی

سشیل مودی: فائل فوٹو

قابل ذکر ہے کہ مسٹر سشیل نے منگل کو جنتا دربار کے بعد منعقد پریس کانفرنس میں مسٹر یادو اور ان کے خاندان کے خلاف کام کے بدلے زمین معاملے میں ایک نیا انکشاف کرتے ہوئے کہا تھا کہ آر جے ڈی صدر کے بڑے بیٹے اور ریاست کے وزیر صحت تیج پرتاپ یادو کو صرف تین سال آٹھ ماہ کی عمر میں ہی لالو -رابڑی حکومت میں سائنس اور ٹیکنالوجی اور توانائی کے وزیر رہے برج بهاري پرساد کی اہلیہ رما دیوی نے 23 مارچ 1992 کو 13 ایکڑ 12 ڈسمل زمین عطیہ میں دی تھی۔ اس پر آر جے ڈی صدر نے کل بی جے پی لیڈر کے الزامات کو بے بنیاد بتاتے ہوئے کہا تھا کہ اس کے بارے میں پتہ چلتے ہی انہوں نے عطیہ کو منسوخ کروا دیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ مسٹر سشیل غلط حقائق پیش کرکے لوگوں کو گمراہ کر رہے ہیں اور وہ دو دن کے اندر ان کے خلاف ہتک عزت کا مقدمہ دائر کریں گے۔

بی جے پی لیڈر نے کہا کہ مسٹر یادو نے یہ تو قبول کر لیا کہ ان کے بیٹے کو محترمہ رما دیوی نے 13 ایکڑ 12 ڈسمل زمین عطیہ میں دی تھی اور یہ الگ بات ہی ہے کہ آر جے ڈی صدر نے 15 ماہ بعد اس عطیہ کو منسوخ کروا دیا تھا ۔ انہوں نے سوالیہ لہجے میں کہا کہ ترقی پسند اتحاد (یوپی اے)حکومت میں آر جے ڈی کوٹے سے وزیر رہے رگھوناتھ جھا اور کانتی سنگھ کے علاوہ بی پی ایل کارڈ رکھنے والے للن چودھری اور ریلوے میں خلاصی عہدے پر فائز کرائے گئے هرديانند چودھری نے مسٹر یادو کے خاندان کو کروڑوں روپے کی زمینیں عطیہ میں دی تھیں تب انہوں نے اسے کیوں منسوخ نہیں کروایا۔ اگر مسٹر یادو ایماندار ہیں تو انہیں تحفہ میں ملیں ان زمینوں کے قرار کومنسوخ کروانا چاہیے تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز