ممتا بنرجی نے دارجلنگ بحران کیلئے مرکزی حکومت کو ذمہ دار ٹھہرایا ، کہا : نہیں چلے گی تقسیم کی پالیسی

Jun 29, 2017 09:33 PM IST | Updated on: Jun 29, 2017 09:33 PM IST

کلکتہ : مغربی بنگال کی وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے دارجلنگ میں سیاسی بحران کیلئے مرکزی حکومت کو مورد الزام ٹھہراتے ہوئے کہا ہے کہ مغربی بنگال کو تقسیم کرنے کی پالیسی نہیں چلے گی ۔ بردوان ضلع میں عوامی میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ چوں کہ مرکزی حکومت کشمیر میں مکمل طور پر ناکام ہوچکی ہے ۔مگر یہ لوگ دارجلنگ میں دخل اندازی کرنے کی کوشش کررہے ہیں تاکہ بنگال کو دو حصوں میں تقسیم کردیا جائے ۔مگر اس کو شش کو ناکام کردوں گی اور یہ کبھی بھی نہیں ہوسکتا ہے ۔

وزیرا علیٰ نے کہا کہ ہم دارجلنگ کے عوام کو سب کچھ دینے کو تیار ہیں ۔مگر بنگال کی تقسیم ناقابل قبول ہے یہ نہیں ہوسکتا ہے یہ نہیں ہوسکتا ہے ۔وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے ائیر انڈیا کو نجی ہاتھوں میں سوپنے کی شدید مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ ائیر انڈیا ملک کا فخر ہے اسے فروخت نہیں کیا جا سکتا ہے ۔خیال رہے کہ ائیر انڈیا اس وقت 50,000کروڑ خسارے میں ہے۔

ممتا بنرجی نے دارجلنگ بحران کیلئے مرکزی حکومت کو ذمہ دار ٹھہرایا ، کہا : نہیں چلے گی تقسیم کی پالیسی

ممتا بنرجی: فائل فوٹو

وزیر اعلیٰ نے کہا کہ مرکز نے محکمہ ہوائی بازی کو بند کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے ۔مگر میں سمجھتی ہوں کہ انڈین ائیر لائنس اور ائیر انڈیا ملک کیلئے فخر ہے۔یہ ادارے ملک کاتاریخی ورثہ ہے ۔اس لیے اس کو فروخت کرنے کی تمام کوششوں کی ہم مخالفت کریں گے۔

وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے شکایت ریاست کے ایک سینئر آفیسر جو ٹی بورڈ آف انڈیا کے چیر مین کے عہدہ پر فائز تھے سے کہا گیا ہے کہ وہ ڈپٹی چیرمین کے عہدہ پر کام کریں اور ان کی جگہ پر ایک سیاسی جماعت سے تعلق رکھنے والے کو چیرمین بنایا گیا ہے ۔

ممتا بنرجی نے کہا کہ وہ ریاست میں پرنسپل سیکریٹری تھے ۔ہم نے انہیں چیرمین کے عہدہ کیلئے بھیجا تھا ۔ہم مرکزی حکومت کو اس کی مخالفت میں خط لکھیں گے ۔ممتا بنرجی نے کہا کہ بی جے پی کے دور میں ملک میں جمہوریت خطرے میں آگئی ہے ۔ملک کا ہرایک شہری خوف زدہ ہے مگر میں بے خوفی سے عوام کے حق میں آواز بلند کرتی رہوں گی۔چاہے مجھے اس کیلئے کوئی بھی قیمت چکانی پڑے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز