نتیش کابینہ میں توسیع، جے ڈی یو کے 14 اور این ڈی اے کے 12 سمیت 26 وزراء نے لیا حلف

Jul 29, 2017 06:10 PM IST | Updated on: Jul 29, 2017 08:06 PM IST

پٹنہ۔ بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار نے اعتماد کا ووٹ حاصل کرنے کے ایک دن بعد آج 26

وزراء کو شامل کرتے ہوئے اپنی کابینہ میں توسیع کی۔ گورنر كیشری ناتھ ترپاٹھی نے ان وزراء کو راج بھون کے راجندر منڈپم میں عہدے اور رازداری کا حلف دلایا۔ ان 26 وزراء میں جنتا دل یونائٹیڈ (جے ڈی یو) کے 14، بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے 11 اور لوک جن شکتی پارٹی (ایل جے پی) کے ایک وزیر شامل ہیں۔

نتیش کابینہ میں توسیع، جے ڈی یو کے 14 اور این ڈی اے کے 12 سمیت 26 وزراء نے لیا حلف

نتیش کمار اور سشیل مودی خوشگوار موڈ میں: تصویر، اے پی

حلف لینے والے وزراء میں جے ڈی یو کے وجیندر پرساد یادو، راجیو رنجن سنگھ عرف للن سنگھ، شرون کمار، جے کمار سنگھ، كرشن نندن پرساد ورما، مہیشور ہزاری، شیلیش کمار، منجو ورما، سنتوش کمار نرالا، خورشید عرف فیروز احمد، مدن سہنی، كپل دیو کامت، دنیش چندر یادو اور رام جی رشی دیو وہیں بی جے پی کے پریم کمار، نند کشور یادو، رام نارائن منڈل، پرمود کمار، ونود نارائن جھا، سریش کمار رما، وجے کمار سنہا، رانا رندھیر سنگھ، ونود کمار سنگھ، کرشن کمار رشی اور برج کشور بند شامل ہیں جبکہ ایل جے پی کے واحد لیڈر مسٹر پشوپتی کمار پارس کو کابینہ میں جگہ دی گئی ہے۔ وزیر کے عہدے کا حلف لینے والے نئے چہروں میں بی جے پی کے پرمود کمار، ونود نارائن جھا، سریش کمار شرما، وجے کمار سنہا، رانا رندھیر سنگھ، ونود کمار سنگھ، برج کشور بند جبکہ جے ڈی یو سے دنیش چندر یادو، رام جی رشی دیو اور ایل جے پی کے پشوپتی کمار پارس شامل ہیں۔

جے ڈی یو کے راجیو رنجن سنگھ عرف للن سنگھ اور بی جے پی کے ونود نارائن جھا قانون ساز کونسل کے رکن ہیں جبکہ ایل جے پی کے مسٹر پارس قانون ساز اسمبلی کے دونوں ایوانوں میں سے کسی بھی ایوان کے رکن نہیں ہیں۔ بی جے پی کوٹے سے وزیر کے عہدے کا حلف لینے والے پارٹی کے سابق صوبائی صدر اور ایم ایل سی منگل پانڈے کے نہیں پہنچنے کی وجہ سے حلف نہیں لے سکے۔ مسٹر پانڈے ہماچل پردیش بی جے پی کے پارٹی امور کے انچارج ہیں۔

اس موقع پر وزیر اعلی نتیش کمار، نائب وزیر اعلی سشیل کمار مودی، اسمبلی کے اسپیکر وجے کمار چودھری، قانون ساز کونسل کے ڈپٹی چیئرمین هار ون رشید، ایل جے پی لیڈر چراغ پاسوان کے علاوہ پٹنہ ہائی کورٹ کے جج سمیت کئی دیگر معززین موجود تھے۔ غور طلب ہے کہ 27 جولائی کو مسٹر نتیش کمار نے وزیر اعلی اور بی جے پی لیڈر سشیل کمار مودی نے وزیر کے طور پر عہدہ اور رازداری کا حلف لیا تھا۔ اس سے پہلے 26 جولائی کو مسٹر کمار نے راشٹریہ جنتا دل، کانگریس اور جے ڈی یو کی مهاگٹھ بندھن حکومت

سے ناطہ توڑنے کے بعد وزیر اعلی کے عہدے سے استعفی دے دیا تھا۔ اس کے تین گھنٹے کے اندر ہی بی جے پی نے مسٹر کمار کو نئی حکومت بنانے کے لئے غیر مشروط حمایت دینے کا اعلان کر دیا۔ اس کے بعد جے ڈی یو اور قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے) کے اراکین اسمبلی کی مشترکہ میٹنگ ہوئی جس میں مسٹر کمار کو لیڈر منتخب کرنے کے بعد مسٹر کمار نے گورنر سے ملاقات کر کے 131 حامی ممبران اسمبلی کی فہرست سونپی اور حکومت بنانے کا دعوی کیا۔ گورنر نے مسٹر کمار کے دعوے کو قبول کرتے ہوئے انہیں حکومت بنانے کی دعوت دے دی۔ اسی کے ساتھ مسٹر کمار نے استعفی کے 16 گھنٹے کے اندر ہی دوبارہ وزیر اعلی کے عہدے کا حلف لے لیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز