ہندوستان اورچین کے درمیان سرحد پر کشیدگی میں اضافہ ، دونوں ممالک نے تعینات کئے 3000 فوجی

Jun 30, 2017 10:10 AM IST | Updated on: Jun 30, 2017 10:10 AM IST

سکم - بھوٹان - تبت کے ٹرائی جنکشن پر ہندوستان اور چین کے درمیان کشیدگی بڑھتی جارہی ہے ۔ چین ہندوستانی فوج کو تاریخ کی یاد دہانی کر اكر آنکھیں دکھا رہا ہے ۔ وہیں اب خبر ہے کہ دونوں ممالک نے ٹرائی جنکشن پر تین تین ہزار فوجیوں کو تعینات کر دیا ہے۔

ادھر فوج کے سربراہ بپن راوت نے بھی صورت حال کا جائزہ لینے کے لئے جمعرات کو گنگٹوک میں واقع 17 ماؤنٹین ڈویژن اور كلمپونگ میں واقع 27 ماؤنٹین ڈویژن کا دورہ کیا ۔ چین نے فوج کے سربراہ کے دورے کو لے کر اعتراض بھی درج کرایا تھا ۔

ہندوستان اورچین کے درمیان سرحد پر کشیدگی میں اضافہ ، دونوں ممالک نے تعینات کئے 3000 فوجی

تاہم ہندوستانی فوج فی الحال اس مسئلہ پر کچھ نہیں کہہ رہی ہے ۔ میڈیا اطلاعات کے مطابق سالوں سے ٹرائی جنکشن پر فوجی تعینات ہیں ، لیکن ڈوكا لا جنرل پر فوجیوں کی حال میں ہوئی تعیناتی کافی سنگین ہے ۔ دونوں ہی ملک اپنے مقام سے ہٹنا نہیں چاہتے ۔

فوج کے سربراہ نے اپنے دورے میں خاص طور پر 17 ڈویژن میں فوجیوں کی تعیناتی پر غور کیا ۔ ان پر مشرقی سکم کی حفاظت کی ذمہ داری ہے ۔ فوج کے سربراہ کے ساتھ ملاقات میں 33 کورپس اور 17 ڈویژن كمانڈرس سمیت تمام بڑے افسران موجود تھے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز