کانپور ٹرین حادثہ کے پیچھے آئی ایس آئی کی سازش؟، سیکورٹی ایجنسیاں بہار پہنچیں ، گرفتار ملزموں کو ریمانڈ پر بھیجا گیا

Jan 18, 2017 08:13 PM IST | Updated on: Jan 18, 2017 08:14 PM IST

پٹنہ: بہار میں ركسول کی ایک عدالت نے پاکستانی انٹیلی جنس ایجنسی انٹر سروسز انٹیلی جنس (آئی ایس آئی) کی ہدایت پر اتر پردیش کے کانپور کے پاس دو ٹرینوں کو حادثہ کا شکار کرانے کے معاملے میں شامل ہونے کے تین مبینہ ملزمان کو آج چھ دن کی پولیس حراست میں بھیج دیا۔

سب ڈویژنل جوڈیشیل مجسٹریٹ سرویش کمار مشرا نے پولیس کی تینوں ملزمان کو ریمانڈ پر دینے کے مطالبے پر سماعت کرتے ہوئے یہ فیصلہ سنایا ہے۔ چھ دن کی ریمانڈ کے دوران مرکز کے ساتھ ہی ریاست کی سیکورٹی ایجنسیاں ان تین ملزمان اوما شنکر پٹیل، موتی لال پاسوان اور مکیش یادو سے ان کے آئی ایس آئی سے تار جڑے ہونے کے بارے میں پوچھ گچھ کریں گی۔

کانپور ٹرین حادثہ کے پیچھے آئی ایس آئی کی سازش؟، سیکورٹی ایجنسیاں بہار پہنچیں ، گرفتار ملزموں کو ریمانڈ پر بھیجا گیا

file photo

واضح رہے کہ ان تین مجرموں سے پوچھ گچھ کرنے کے لئے ملک کی خفیہ ایجنسی ریسرچ اینالسس ونگ (را)، انٹیلی جنس بیورو (آئی بی) اور اتر پردیش کا انسداد دہشت گردی دستہ (اے ٹی ایس) کی ٹیم مشرقی چمپارن ضلع ہیڈکوارٹر موتیہاری پہنچ گئی ہے۔ گرفتار شدہ نوجوانوں نے پولیس پوچھ گچھ کے دوران گزشتہ سال نومبر اور دسمبر میں اتر پردیش کی صنعتی نگری کانپور کے پاس دو ٹرینوں اجمیر-سیالدہ ایکسپریس اور اندور-پٹنہ ایکسپریس کے حادثہ کا شکار ہونے کے سلسلے میں اپنے ملوث ہونے کا اعتراف کیا ہے۔ ان حادثات میں تقریبا 150 مسافروں کی موت ہوئی تھی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز