ای وی ایم میں خرابی نہیں تو کیوں تبدیل کی جا رہی ہیں 10 لاکھ مشینیں: لالو یادو

Apr 03, 2017 05:49 PM IST | Updated on: Apr 03, 2017 05:49 PM IST

پٹنہ۔  راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کے صدر لالو پرساد یادو نے آج الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم) کی معتبریت پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ اگر اس میں کوئی خرابی نہیں ہے تو یہ مشینیں کیوں تبدیل کی جا رہی ہیں ۔ مسٹر یادو نے ٹویٹ کیا، "جب گڑبڑ نہیں ہو سکتی تو کیوں 10 لاکھ ای وی ایم مشینیں تبدیل کی جا رہی ہیں۔ پانچ ریاستوں کے انتخابات سے پہلے ان مشینوں کو کیوں نہیں تبدیل کی گئیں۔ "انہوں نے کہا کہ مدھیہ پردیش کے بھنڈ میں حال ہی میں کئے گئے مظاہرے کے دوران یہ واضح ہوا کہ ای وی ایم مشین میں خرابی ہے اور کسی بھی بٹن کو دبانے سے کسی مخصوص پارٹی کے حق میں ہی ووٹ جاتا ہے۔ آر جے ڈی صدر نے کہا کہ اس طرح کی خرابی واقعی بہت ہی خطرناک اور سنگین ہے۔ انہوں نے کہا کہ جمہوریت کے لئے اس طرح کی گڑ بڑی انتہائی خطرناک ثابت ہوگی۔

واضح ر ہے کہ الیکشن کمیشن نے ای وی ایم مشین میں خرابی کی اطلاع میڈیا میں آنے کے بعد نئی ای وی ایم مشین خریدنے کی بات کہی ہے۔ کمیشن نے اگرچہ واضح کیا کہ ای وی ایم سے چھیڑ چھاڑ کی کوشش سے یہ کام کرنا بند کر دے گی۔ وزارت قانون کے مطابق انتخابات کرانے کے لئے نئی ای وی ایم بنانے میں 1940 کروڑ روپے خرچ ہونگے اور یہ سال 2018 یعنی اگلے لوک سبھا انتخابات سے پہلے فراہم کرا دی جائیں گی۔

ای وی ایم میں خرابی نہیں تو کیوں تبدیل کی جا رہی ہیں 10 لاکھ مشینیں: لالو یادو

لالو پرساد: فائل فوٹو

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز