اگر میں مر بھی جاتا ہوں ، تو آر جے ڈی اپنے نظریات سے سمجھوتہ نہیں کرے گا : لالو پرساد یادو

Jul 30, 2017 01:19 PM IST | Updated on: Jul 30, 2017 01:19 PM IST

پٹنہ : آر جے ڈی کے سربراہ لالو پرساد یادو نے ہفتہ کو کہا کہ نتیش کمار کے اتحاد کو بی جے پی کے ساتھ تبدیل کرنے کا فیصلہ ایک تاریخی غلطی ثابت ہوگی۔ ایسے میں بہار کے وزیر اعلی کبھی اپنی وراثت نہیں بنا پائیں گے۔ سی این نیوز 18 کی ماریہ شکیل کے ساتھ ایک انٹرویو میں لالو یادو نے بتايا کہ کس طرح مهاگٹھ بندھن وقت سے پہلے ٹوٹ گیا، کس طرح ان کے خاندان کے خلاف کرپشن کے الزامات لگے اور کیا هوگا ان کا اگلا قدم۔ساتھ ہی ساتھ انہوں نے میڈیا رپورٹوں کو سختی طور پر مسترد کر دیا کہ انہوں نے پہلے بی جے پی کے ساتھ ایک معاہدہ کرنے کی کوشش کی یا نتیش کمار حکومت کو الزامات کو دور کرنے کی پیشکش کی۔

اس سوال کے جواب میں کہ آپ نے کہا تھا کہ نتیش کمار کے پیٹ میں دانت ہیں۔ اگر آپ ان کو اتنی اچھی طرح جانتے تھے، تو آپ نے 2015 میں اتحاد کیوں کیا؟لالوپرساد نے کہا کہ جب سے حکومت وزیر اعظم مودی اور امت شاہ کی قیادت میں اقتدار میں آئی ہے، اس کے بعد سے ہم نے اقلیتوں کے خلاف بہت سے واقعات دیکھے ہیں، ہندو یووا واہنی اور بجرنگ دل جیسی تنظیموں کی طرف سے رام مندر کے مطالبہ میں بھی شدت آگئی ہے۔جو بھی میں نے کہا تھا وہ صحیح ثابت کر دیا ہے۔ میں نے کہا تھا کہ مودی کی قیادت میں ملک یا تو بڑا ہو جائے گا یا بکھر جائے گا، میں نے یہ بہت پہلے کہا تھا۔

اگر میں مر بھی جاتا ہوں ، تو آر جے ڈی اپنے نظریات سے سمجھوتہ نہیں کرے گا : لالو پرساد یادو

میں پولیٹیکل سائنس کا طالب علم تھا، پولیٹیکل سائنس میں کوئی بھی پیشن گوئی کر سکتا ہے، جیسے میری پیشن گوئی صحیح ثابت ہوئی ، آج ایمرجنسی جیسی صورتحال ہو گئی ہے، آپ نے دیکھا ہے کہ نوٹ بندی کے دوران کیا ہوا، جب آپ بیف کے بارے میں بات کرتے ہیں، تو بتا دیں کہ مودی اور امت شاہ کی قیادت میں ہندوستان سب سے بڑا بیف کا ایکسپورٹربن گیا ہے۔

میں نے کہا تھا کہ نتیش کی کوئی وراثت نہیں ہوگی، 1995 اور 2014 کے انتخابات کے دوران بھی وہ ہار گئے، لیکن میں 4-5 لاکھ ووٹوں سے تنہا لڑتا رہا۔ جیسا کہ تیجسوي نے جمعہ کو کہا تھا کہ 1995 میں جب بہار اور جھارکھنڈ متحد تھا، تب نتیش نے صرف سات سیٹیں جیتیں تھیں ، انہیں ان کی حیثیت کی یاد دلا دی گئی، جب انہیں سمتا پارٹی تشکیل دی۔ نتیش ایک چھوٹے بھائی کی طرح ہے۔ انہیں چھوٹا ہی رہنا چاہئے۔

لالو پرساد یادو نے مزید کہا کہ میں پارٹی کے نظریے سے سمجھوتہ نہیں کروں گا۔ خواہ مجھے مار دیا جائے یا پھانسی پر لٹکا دیا جائے، لیکن پارٹی کے نظریے سے کوئی سمجھوتہ نہیں کریں گے۔ یہی میں نے سونیا جی اور دیگر پارٹی کے لیڈروں کو اس میٹنگ میں بتایا۔ میں آج بھی یہی کہتا ہوں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز