بی ایس پی سپریمو مایاوتی کو ملا لالو پرساد کا ساتھ ، کہا : بہار سے بھیجیں گے راجیہ سبھا

Jul 18, 2017 10:47 PM IST | Updated on: Jul 18, 2017 11:58 PM IST

پٹنہ: راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کے صدر لالو پرساد یادو نے آج بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) کی سربراہ اور اتر پردیش کی سابق وزیر اعلی مایاوتی کو بہار سے راجیہ سبھا بھیجنے کی تجویز پیش کی ۔ مسٹر یادو نے یہاں صحافیوں سے بات چیت میں کہا کہ یہ بدقسمتی کی بات ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے محترمہ مایاوتی کو راجیہ سبھا میں دلت کے معاملے پر بولنے کا موقع نہیں دیا جس کی وجہ سے اس کی مخالفت میں انہیں راجیہ سبھا کی رکنیت سے استعفی دینا پڑا۔ انہوں نے کہا کہ محترمہ مایاوتی اترپردیش کے سہارنپور میں دلتوں کے خلاف تشدد کے رجحان پر راجیہ سبھا میں بولنا چاہتی تھی، لیکن بی جے پی نے انہیں بولنے کا موقع نہیں دیا۔

آر جے ڈی سربراہ نے کہا کہ محترمہ مایاوتی نے استعفی دے کر ایک جرات مندانہ قدم اٹھایا ہے جس کی وہ تعریف کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی جمہوریت کا گلا گھونٹنا چاہتی ہے، لیکن ان کی پارٹی کسی قیمت پر ایسا نہیں ہونے دے گی۔ مسٹر یادو نے کہا کہ جمہوریت میں سب کو بولنے کی آزادی ہے اور کسی کی آواز کو نمبر کی قوت کی بنیاد پر دبایا نہیں جا سکتا ہے۔ چانکیہ نے کہا تھا کہ وہ ایوان ایوان نہیں ہے جس میں اقلیت والے کو اکثریت کے لوگ بولنے کا موقع نہ دیں۔

بی ایس پی سپریمو مایاوتی کو ملا لالو پرساد کا ساتھ ، کہا : بہار سے بھیجیں گے راجیہ سبھا

آر جے ڈی کے سربراہ نے کہا کہ محترمہ مایاوتی اگر چاہیں تو ان کی پارٹی انہیں بہار سے راجیہ سبھا بھیجنے کے لیے تیار ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی کے خلاف لڑائي میں ان کی پارٹی محترمہ مایاوتی کے ساتھ مضبوطی سے کھڑی رہے گی۔ دریں اثنا آر جے ڈی کے سینئر لیڈر اور بہار کے وزیر خزانہ عبد الباری صدیقی نے بھی محترمہ مایاوتی کو راجیہ سبھا میں بولنے کا موقع نہیں دینے کے لئے بی جے پی کی سخت تنقید کی۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی اپنے مخالفین کی آواز کو دبانے کے لئے ہر ہتھکنڈہ اپنا رہی ہے۔ یہ عوام بھی سمجھ رہے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز