پلٹورام کا کریئر ختم، آر جے ڈی کی براہ راست لڑائی بی جے پی سے: لالو پرساد یادو

Oct 21, 2017 09:18 PM IST | Updated on: Oct 21, 2017 09:18 PM IST

پٹنہ۔ جنتا دل یونائیٹیڈ کے قومی صدر نتیش کمار کے عظیم اتحاد سے رشتہ توڑ کر قومی جمہوری اتحاد(این ڈی اے) میں شامل ہونے کے بعد مسلسل جارح رہے راشٹریہ جنتا دل(آر جے ڈی) کے صدر لالو پرساد یادو نے آج کہا کہ ریاست میں ’پلٹورام‘(مسٹر کمار)کا سیاسی مستقبل ختم ہوگیا ہے اور اب آر جے ڈی کی براہ راست لڑائی بھارتیہ جنتا پارٹی(بی جےپی)کے ساتھ ہے۔ مسٹر یادو نے یہاں کانگریس کی جانب سے بہار کے پہلے وزیراعلی شری کرشن سنگھ کی 130ویں سالگرہ پر منعقد پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے کہا،’’2015 کے اسمبلی انتخابات میں عظیم اتحاد(آرجے ڈی،جے ڈی یو اور کانگریس)کو فرقہ وارانہ طاقتوں کے خلاف عوام کا ساتھ ملاتھا لیکن مسٹر کمار نے ٹیم بدل کر بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی)کے ساتھ حکومت بنالی۔اس سے ریاست کے عوام میں زبردست اشتعال ہے۔ ریاست میں پلٹورام اور ان کی پارٹی جنتا دل یونائیٹیڈ کا سیاسی مستقبل ختم ہوگیا ہے اور آئندہ انتخابات میں آرجے ڈی کی براہ لڑائی بی جے پی کے ساتھ ہے۔

آرجے ڈی صدر نے کہا کہ اسمبلی انتخابات کی تشہیر کے دوران سنگھ سے پاک ہندوستان بنانے کا دعویٰ کرنے والے مسٹر کمار اسی راشٹریہ سویم سیوک سنگھ(آر ایس ایس)کی گود میں جابیٹھے۔ یہ عظیم اتحاد کو ملی عوام کی زبردست حمایت کی توہین ہے،جسے ریاست کے عوام کبھی معاف نہیں کریں گے۔آئندہ انتخابات میں عوام پلٹورام کو ضرور سبق سکھائیں گے۔ مسٹر یادو نے نائب وزیراعلی سشیل کمار مودی پر ریاست کے مشہور اربوں روپے کے سرجن گھوٹالے معاملے میں ملوث ہونے کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ اس غبن میں مسٹر مودی کی بہن ریکھا مودی کے بینک کھاتے میں ریئل ٹائم گراس سیٹلمنٹ(آر ٹی جی ایس)کے ذریعہ کروڑوں روپے ٹرانسفر ہوئے ہیں۔ اس گھوٹالے معاملے میں ملوث لوگ بچ نہیں پائیں گے۔

پلٹورام کا کریئر ختم، آر جے ڈی کی براہ راست لڑائی بی جے پی سے: لالو پرساد یادو

لالو یادو نے یہاں کانگریس کی جانب سے بہار کے پہلے وزیراعلی شری کرشن سنگھ کی 130ویں سالگرہ پر منعقد پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے کہا،’’2015 کے اسمبلی انتخابات میں عظیم اتحاد(آرجے ڈی،جے ڈی یو اور کانگریس)کو فرقہ وارانہ طاقتوں کے خلاف عوام کا ساتھ ملاتھا لیکن مسٹر کمار نے ٹیم بدل کر بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی)کے ساتھ حکومت بنالی۔

مسٹر یادو نے کہا کہ مسٹر مودی نے صرف جملے بازی کرکے ملک کے عوام کو دھوکہ دیا ہے۔ وزیراعظم مسٹر مودی نےبیرون ملکوں سے کالا دھن واپس لاکر ملک کے ہر ایک شہری کے کھاتے میں 15لاکھ روپے جمع کرانے کادعوی کرکے لوگوں سے جھوٹ بولا۔مسٹر یادو نے کہا کہ مسٹر مودی نے انتخابات کے دوران بھی وعدہ کیا تھا کہ اگر ان کی حکومت بنی تو کسانوں کو ہر فصل پر ان کی لاگت کا 50فیصد منافع جوڑکر کم سے کم امدادی رقم(ایم ایس پی) دی جائے گی لیکن یہ وعدہ آج تک پورا نہیں کیاگیا۔ اس کے برعکس ان کی حکومت نے ملک کے غریب عوام پر نوٹوں کی منسوخی تھوپ دی۔ اس دوران سینکڑوں لوگ مارے گئے۔

آر جے ڈی صدرنے الزام لگاتے ہوئے کہا کہ مودی حکومت ہر سال دو کروڑ نوجوانوں کو روزگار دینے کا وعدہ تو پورا نہیں کر سکی لیکن نوٹوں کی منسوخی تھوپ کر لاکھوں غریبوں کو بے روزگار ضرور بنا دیا۔ وہیں،اس سے بی جے پی اور آر ایس ایس کے لوگوں کے کالے دھن کو سفید کیا گیا۔ انہوں نے دعوی کیاکہ 2019کے عام انتخابات میں ملک سے بی جے پی کا پوری طرح صفایا ہوجائے گا۔ مسٹر یادو نے سوالیہ لہجے میں کہا کہ ’’اپوزیشن کا منہ بند کرنے کی پالیسی پر کام کررہی مودی حکومت انکم ٹیکس ،انفورسمنٹ ڈائیریکٹوریٹ اور مرکزی تفتیشی بیورو(سی بی آئی)کا سیاسی استعمال کرکے مجھے اور میرے بیٹے تیجسوی پرساد یادو کو پھنسانے کی کوشش کررہی ہے لیکن مسٹر مودی کے وزیراعظم بننے کے بعد مسٹر شاہ کے بیٹے جے شاہ کی کمپنی ٹیمپل انٹرپرائیسز کا کاروبار 16ہزار گنا بڑھ جانے پر حکومت نے انہیں ایک بھی نوٹس نہیں بھیجا ہے۔‘‘ انہوں نے شری کرشن سنگھ کو جدید بہار کا خالق بتاتے ہوئے کہا کہ اگر ان کے نظریے اور خیالات پر عمل کیا جائے تو ایک بار پھر بہار کی ترقی کی رفتار تیز ہوجائےگی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز