بی جے پی درگا پوجا کے موقع پر بنگال میں ہندو - مسلم فساد کرانے کی کوشش میں : وزیر اعلی ممتا بنرجی

Aug 28, 2017 06:33 PM IST | Updated on: Aug 28, 2017 09:14 PM IST

کلکتہ : مغربی بنگال کی وزیراعلیٰ ممتا بنرجی نے آج ’’بی جے پی ہٹاؤ،دیش بچاؤ‘‘ کا نعرہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ بنگال اس سمت میں ملک کی رہنمائی کرسکتا ہے ۔ ترنمول کانگریس کے چھاتر پریشد کے یوم تاسیس کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے ممتا بنرجی نے آج کہا کہ بی جے پی درگا پوجا کے موقع پر بنگال میں ہندو اور مسلمانوں کے درمیان کے تشدد کرانے کی کوشش کررہی ہے ۔ممتابنرجی نے کہا کہ جذبات کی بنیاد پر بی جے پی عوام کو بھڑکانے کی کوشش نہ کرے۔ہمارے کلچر میں اکادوشی کے دن مورتی بھسان مکمل طور پر نہیں ہوتی ہے ۔تو پھر بی جے پی اسی دن مورتی بھسان پر بضد کیوں ہے ۔

ممتا بنرجی نے کہا کہ جو بی جے پی ہریانہ میں پنچکولہ میں حالات سنبھال نہیں پائی ۔اگر مورتی بھسان اور محرم ایک دن میں ہوتو کیا یہ لوگ مورتی بھسان کرسکتے ہیں ۔بی جے پی کو پہلے اپنے گھر کی حفاظت کرنی چاہے۔پنچکولہ اور اترپردیش میں کیا ہورہا ہے دنیا جانتی ہے۔ممتابنرجی نے کہا کہ ہریانہ میں بی جے پی کی حکومت تھی ۔مگر وہ حالات کو سنبھال نہیں پائی اور 30افراد کی موت ہوگئی ۔اگر کوئی واقعہ بی جے پی کے زیر اقتدار ریاست میں ہوتا ہے تو فوری فوج کو طلب کرلیا جاتا ہے مگر غیر بی جے پی ریاست میں اس طرے کے واقعات ہوتے ہیں تو فوج کو طلب نہیں کیا جاتا ہے ۔

بی جے پی درگا پوجا کے موقع پر بنگال میں ہندو - مسلم فساد کرانے کی کوشش میں : وزیر اعلی ممتا بنرجی

ممتا بنرجی نے کہا کہ نوجوان اور طلباء ملک کے مستقبل ہیں ۔یہ لوگ 2019 میں ملک میں تبدیلی لانے کیلئے جدو جہد کریں گے اور ان کی بدولت ملک میں تبدیلی آئے گی ۔انہوں نے نوجوانوں سے اپیل کی وہ بی جے پی کے افواہوں کا مقابلہ کرنے کیلئے سماجی ویب سائٹ پر سرگرم رول ادا کریں ۔انہوں نے کہاکہ نوجوان ملک کے مستقبل کی تعمیر کرنے کیلئے عوام سے رابطہ کریں ۔کیوں کہ ملک کی قیادت کی باگ ڈور مستقبل میں جن ہاتھوں میں جائے گی وہ طلباء برادری سے ہوگا۔ممتا بنرجی نے کہا کہ میرے سیاسی کےئرئیر کی شروعات بھی طالب علمی کے دور سے ہوئی تھی ۔زندگی صرف طلب علم کا نام نہیں ہے بلکہ اس سے زیادہ ضروری ہے کہ بہتر انسان بنایا جائے۔ممتا بنرجی نے سوامی ویکانند کے حوالے سے کہا کہ سوامی جی نے کہا تھا کہ اخلاقی اقدار کی تعمیر زندگی کا سب سے اہم حصہ ہے ۔

ممتا بنرجی نے کہاکہ 28اگست کی تاریخ بہت ہی یادگار اور اہم دن ہے ۔ہم نے اسی دن طالب علموں کو اپنے ساتھ جوڑنے کی شروعات کی تھی ۔انہوں نے کہا کہ آج منی پاور کے ذریعہ فیس بک کو سیاسی جماعتوں نے ’’فیک بک بنادیا ہے ۔طلباء اس کا مقابلہ کرنے کیلئے سامنے آئیں اور سماجی کو حقیقت سے باخبر کریں ۔ ممتا بنرجی نے کہا کہ میں نے 34سالوں تک بایاں محاذ حکومت کے خلاف جد و جہد کی ۔اب بائیں محاذ کے لوگ دائیں بازو کے ساتھ مل گئے ہیں ۔رام راون سے لڑرہے ہیں ۔ممتا بنرجی نے کہا کہ دہلی سے جعلی رام آتے ہیں اور ان سے بام(بایاں محاذ)مل جاتے ہیں ۔

ممتا بنرجی نے کہا کہ ترنمول کانگریس نے سپریم کورٹ میں شخصی ازادی کیلئے جدو جہد کی اور ہماری جیت ہوئی ۔ممتا بنرجی نے کہا کہ بی جے پی موت سے زندگی تک آدھار کارڈکو لازمی کرنے کی کوشش کررہی ہے ۔اس کے ذریعہ ہماری نجی زندگی کو کنٹرول کرنے کی کوشش کررہی ہے ۔آ پ کہا ں جارہے ہیں ، کس سے بات کررہے ہیں اور کیا کھارہے ہیں یہ سب آدھار کارڈ کے ذریعہ جاننے کی کوشش کی جارہی ہے۔ممتا بنرجی نے کہا کہ جب آپ کے موبائل کی تفصیلات کو ئی ہیک کرلے تو اس وقت کیا ہوگا ۔اس وقت آپ کی پرائیویسی کا کیا ہوگا ۔

ممتا بنرجی نے کہا کہ کچھ لیڈر صرف تقریر کرتے ہیں ، راشن نہیں دیتے ہیں ، اچھے دن کہا ہیں؟ عوام اب مٹھائی تک کھا نہیں کستے ہیں ۔ان پر ٹیکس کا بوجھ لگادیا گیا ہے ۔ہم لوگ ٹوائیلیٹ سے ڈیجٹل تک کیلئے جد و جہدد کررہے ہیں اور بی جے پی والے ان کاموں کا صرف سہرا لیتے ہیں ۔ممتا بنرجی نے کہا کہ ان لیڈروں کی جگہ اچھے لیڈران کی آمد صرف ان کے طلباء کے درمیا سے ہوگی ۔

ممتا بنرجی نے کہا کہ ان لوگوں نے بیٹی بچاؤ بیٹی بڑھاؤ پروجیکٹ شروع کیا تھا اور اس کیلئے 100کروڑ مختص کیا گیا ۔یعنی ایک ریاست کیلئے 2.5کروڑ ۔ظاہر ہے کہ ان روپیوں کا کیا ہوگا۔جب کہ مغربی بنگال میں بچیوں کو آگے بڑھانے کیلئے 5000ہزار کروڑ روپے مختص کیے ہیں۔ دوسری جانب وزیراعلیٰ ممتا بنرجی نے دہلی میں ضمنی انتخاب میں بوانہ سے عام آدمی پارٹی کے امیدوار کی جیت پر وزیراعلیٰ اروند کجری وال کو مبارک باد پیش کیا ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز