راجستھان میں بہیمانہ قتل کا شکار افراز الاسلام کو ممتا بنرجی کا تین لاکھ روپے اور ایک فرد کو نوکردی دینے کا اعلان

مغربی بنگال کی وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے راجستھان میں لو جہاد کے نام پر مارے گئے بنگالی مسلم افرازالاسلام کے اہل خانہ کو 3لاکھ روپے دینے کا اعلان کیا ہے ۔

Dec 08, 2017 06:06 PM IST | Updated on: Dec 08, 2017 09:22 PM IST

کلکتہ: مغربی بنگال کی وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے راجستھان میں لو جہاد کے نام پر مارے گئے بنگالی مسلم افرازالاسلام کے اہل خانہ کو 3لاکھ روپے دینے اور گھر کے ایک اہل فرد کو نوکردی دینے کا اعلان کیا ہے ۔ افرازالاسلام کے اہل خانہ سے تعزیت کرتے ہوئے وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے ٹوئیٹ کرتے ہوئے لکھا ہے کہ راجستھان میں پیش آنے والا واقعہ انتہائی افسوس ناک ہے ۔ہماری ریاست کے مالدہ ضلع کے رہنے والے افرازالاسلام خان کو بہیمانہ انداز میں قتل کردیا گیا ہے ۔اس کی وجہ سے اس کے خاندان پر غم کا پہاڑ ٹوٹ گیا ہے ۔ہم اس خاندان کی چھوٹی مدد کرتے ہوئے فیصلہ کیا کہ مقتول کے خاندان کو بنگال حکومت 3لاکھ روپے اور گھر کے ایک فرد کو نوکردی جائے گا۔

وزیرا علی ممتا بنرجی نے اس واقعہ کے منظر عام پر آنے کے بعد ہی کل ٹوئیٹ کرتے ہوئے اس پورے واقعہ پر غم و غصہ کا اظہار کیا تھا اور اپنے ٹوئیٹ میں کہا تھا کہ کوئی انسانی اس قدر حیوانیت پر کیسے اتر سکتا ہے ؟۔وزیرا علیٰ نے آج اپنے ٹوئیٹ میں کہا ہے ترنمول کانگریس کے ممبران پارلیمنٹ و ممبر اسمبلی ان کے گھر جاکر ملاقات کرے گا۔

راجستھان میں بہیمانہ قتل کا شکار افراز الاسلام کو ممتا بنرجی کا تین لاکھ روپے اور ایک فرد کو نوکردی دینے کا اعلان

مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی: فائل فوٹو۔

دوسری جانب مغربی بنگال کی وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے راجستھان میں قتل ہوئے افرازالاسلام کے اہل خانہ سے بات چیت کرکے ہرممکن مدد کرنے کی یقین دہانی کرائی۔ممتا بنرجی سے بات چیت کرنے کے بعد گل بہار بی بی نے بتایا کہ وزیر اعلیٰ نے بات چیت کرکے دلاسہ دلیا اور یقین دہانی کرائی ہے کہ حکومت ان کے ساتھ ہے ۔وزیرا علیٰ نے یقین دہانی کرائی ہے کہ قصور وارں کو سزا دلانے کی ہر ممکن کوشش کی جائے گی۔

افراز وگزشتہ 12سالوں سے وہاں کام کررہا تھا اور وہیں سے وہ اپنی ماں ، بیوی اور بیٹی کی کفالت کیلئے روپے بھیجتا تھا۔لدہ ضلع کے کالیاچک بلاک کے سیدا پور کا رہنے والا ہے۔خیال رہے کہ دو دن قبل راجستھان کے راجسمند ضلع شنبھولال نامی شخص نے کام دلانے کے نام پر بلایا اور اس کے بعد پیچھے سے کدال سے حملہ کردیا ۔پوری طرح سے مارنے کے بعدپٹرول جھڑک کر آگ لگادی ۔اور اس پورے واقعہ کی ویڈیوگرافی کرنے کے بعد واٹس اپ لوجہاد میں ملوث افراد کو سبق سیکھانے کے پیغام کے ساتھ ویڈیو عام کردیاگیا۔راجستھان پولس نے قاتل شنبھولا ل اور ویڈیو گرافی کرنے والے دونوں کو گرفتار ر کرلیا ہے ۔راجستھان کے وزیر داخلہ گلاب چند کٹاریہ نے کل اس واقعہ کی جانچ کیلئے ایس آئی ٹی بنانے کا اعلان کیا ہے ۔

قتل کی خبر پھیلتے ہی اسلام کے گھرمیں گاؤں اور آس پاس کی بستی کے لوگوں کی بھیڑ جمع ہوگئی ہے ۔ افرزالاسلام کی ماں نے کہا کہ قتل والے دن کی صبح کو میں نے افراز سے بات کی تھی ۔مجھے نہیں معلوم کہ میرے بیٹے کاکیوں قتل کردیا ہے ۔میں نے ویڈیو دیکھا ہے ۔میرا مطالبہ ہے کہ قصور وار کو پھانسی دی جائے۔فرازالاسلام کی بیوہ گل بہار بی بی نے بتایا کہ ’’قاتل شمبھو نے میرے شوہر کو کام دلانے کیلئے بلایا تھا اور کہاتھاکہ میرے ساتھ سائٹ پر چلے ۔اسی درمیان وہ پیچھے سے حملہ کردیا۔اگلے دو مہینے میں بیٹی کی شادی ہونے والی تھی۔

اسلام کی بیوی نے کہا کہ کل بدھ کو مجھے قتل کی خبر ملی ہے۔مجھے یقین ہے کہ میرے شوہر کا کسی کے ساتھ بھی محبت کا معاملہ نہیں تھا۔میں چاہتی ہوں کہ قاتل کھلے عام پھانسی دی جائے ۔مجھے نہیں معلوم کہ میں اپنی بیٹی کی شادی کیلئے روپے کا کیسے انتظامات کروں گی ۔افرازالاسلام کے گھروالوں کو یقین ہے کہ لوجہاد کا پورا معاملہ فرضی ہے اور یہ قتل کرنے کا بہانہ بنایا گیا ہے۔افراز الاسلا م اپنی دو بیٹیوں کی شادی کرچکا ہے ۔اس کے پاس کئی ناتی نواسے ہیں ۔ایسے میں لوجہاد کا معاملہ کیسے ہوسکتا ہے ۔ایسے کوئی کیسے اپنی شادی کے چکر میں پڑسکتا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز