بہار: سیمانچل کے بیشتر علاقوں کی صورتحال دردناک ، لاکھوں افراد بے گھر، مولانا اسرارالحق کی مدد کی اپیل

شمالی بہارکی تاریخ میں بھیانک ترین سیلاب کی تباہ کاریوں نے عوام کو بے حال کردیاہے اورلاکھوں لوگ بے گھر ہوچکے ہیں، حکومت کی طرف سے بھی خاطر خواہ راحت رسانی نہیں ہوپارہی ہے۔

Aug 18, 2017 06:11 PM IST | Updated on: Aug 18, 2017 06:40 PM IST

کشن گنج: شمالی بہارکی تاریخ میں بھیانک ترین سیلاب کی تباہ کاریوں نے عوام کو بے حال کردیاہے اورلاکھوں لوگ بے گھر ہوچکے ہیں، حکومت کی طرف سے بھی خاطر خواہ راحت رسانی نہیں ہوپارہی ہے۔کشن گنج،ارریہ،پورنیہ ،کٹیہاراور سیمانچل کے بیشتر علاقوں میں زبردست سیلاب اور مسلسل بارشوں کی وجہ سے نہایت دردناک صورتحال ہے۔لوگ ایک ایک دانے کو محتاج ہوگئے ہیں، جوں جوں پانی کم ہورہاہے لاشیں سامنے آرہی ہیں،ایسے خوفناک مناظر ہیں کہ دیکھ کرہردردمنددل تڑپ اٹھے،اب تک سیلاب کی وجہ سے جاں بحق ہونے والوں کی تعدادتقریباً100ہوچکی ہے، لوگوں میں بیماریاں بھی تیزی سے پھیل رہی ہیں۔

ایک پریس ریلیز میں حضرت مولانااسرارالحق قاسمی نے ملک کے تمام اہل خیر حضرات اپیل سے کی ہے کہ بلاتفریق مذہب و ملت ان تباہ حال لوگوں کی امداد کے لئے آگے آئیں،اس وقت ان مصیبت زدہ افراد کو زیادہ سے زیادہ امداد کی ضرورت ہے۔ واضح رہے کہ پورے سیمانچل خاص طورپرکشن گنج، پورنیہ، ارریا و کٹیہار میں لاکھوں کی تعداد میں بوڑھے،خواتین اور بچے بے گھر ہوچکے ہیں اور دانہ دانہ ترس رہے ہیں،پوری کی پوری آبادی کھنڈرمیں تبدیل ہوچکی ہے،ان لوگوں کو فوری طورپر تعاون اور امداد کی شدید ضرورت ہے۔

بہار: سیمانچل کے بیشتر علاقوں کی صورتحال دردناک ، لاکھوں افراد بے گھر، مولانا اسرارالحق کی مدد کی اپیل

فائل فوٹو

آل انڈیاتعلیمی وملی فاؤنڈیشن کشن گنج کے سکریٹری مولانامسعوداختر قاسمی ، مولاناسعود عالم ندوی ، مولاناعمر فاروق مظاہری اور مولانامحمودعالم ندوی کی ٹیم کشن گنج کے ایم پی و صدر فاؤنڈیشن حضرت مولانا اسرارالحق قاسمی کی قیادت میں مسلسل متاثرہ علاقوں کا جائزہ لے رہی ہے اور لوگوں تک راحت رسانی کا انتظام کررہی ہے،اس کے علاوہ فاؤنڈیشن کے زیر انتظام سیمانچل کے اضلاع میں چلنے والے 90سے زائد مکاتب کے اساتذۂ کرام بھی سیلاب متاثرین کی امداد اورراحت و بچاؤکے کام میں لگے ہوئے ہیں۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز