قرآن وحدیث کے علوم ہماری تمام ضرورتوں کی تکمیل کرتے ہیں : مولانا رابع حسنی ندوی

Mar 12, 2017 07:40 PM IST | Updated on: Mar 12, 2017 07:40 PM IST

نئی دہلی: بہار کی مشہور مرکزی درس گاہ جامعۃ القاسم درالعلوم الاسلامیہ سپول کے زیر اہتمام آج حضرت مولانا رابع حسنی ندوی (صدر آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈوناظم دارالعلوم ندوۃ الکھنوکی صدارت میں تعلیمی بیداری کانفرنس منعقد کیا گیا ۔کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مولانا رابع حسنی ندوی نے سیمانجل جیسے پسماندہ علاقے میں جامعۃ القاسم کے قیام اور مفتی محفوظ الرحمن عثمانی کی کوششوں کوسراہا اور کہاکہ تعلیم کے بغیر کوئی بھی قوم ترقی نہیں کرسکتی ہے اور جو لوگ اس میدان میں خدمات انجام دے رہے وہ بے انتہاء قابل مبارکباد ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ اتنے دوردراز اور پسماندہ علاقے میں مدرسہ قائم کرکے قوم وملت کے غریب بجوں کو تعلیم کی دولت سے آراستہ کرنا،انہیں تعلیم یافتہ بنانا اوران کی تہذیبی و ثقافتی تربیت کرنا ملت اسلامیہ کیلئے بہت بڑی خدمات ہیں ۔انہوں نے کہاکہ اللہ تعالی نے انسان کوعقل اورعلم کی صلاحیت دی ہے وہ علم جوقرآن واحادیث سے ملتی ہے ہماری ساری ضرورتوں کوپوراکرسکتی ہے علم سے دنیا بھی بنائیں اوردین بھی ،دنیامیں جتنانظام ہے یہ سب اللہ کانظام ہے اللہ کے چاہنے سے نظام چلتاہے انسان جب پانی پلادیتاہے تواس کاشکریہ اداکرتاہے اگرنہ کرے توبرامانتاہے اس لئے علم کو اللہ سے جوڑناہے یہاں جونظام تعلیم ہے وہ اللہ سے جوڑتا ہے مفتی محفوظ الرحمان عثمانی کانظام نفع بخش ہے نتیجہ بھی اچھاہوگا ،مولانا رابع حسنی ندو ی صاحب نے تعلیم کی اہمیت پر گفتگو کرتے ہوئے جامعۃالقاسم کے طلبہ کوبھی نصیحت کی اور ان سے محنت کے ساتھ پڑھنے کی تلقین کی ،انہوں نے کہاکہ مسلمانوں کو اس وقت سب سے زیادہ تعلیم پر توجہ دینے کی ضرورت ہے ،تعلیمی بیداری کی تحریک عصر حاضر کی سب سے اہم ضرورت ہے ،انہوںنے کہاکہ مذہبی تعلیم اور اسلامی علوم کا حصول تمام مسلمانوں کو اپنے مشن کا حصہ بنانا چاہیئے۔

دارالعلوم ندوۃ العلماء کے مہتمم اور معروف عالم دین حضرت مولانا سعید الرحمن اعظمی نے اپنے خطاب میں علم کی فضیلت بیان کرتے ہوئے کہاکہ تعلیم ایک ایسی دولت ہے جسے حاصل کرنے کے بعد انسان اپنے اندر اعتماداور قوت محسوس کرتاہے ، قرآن کریم اور احادیث میں تعلیم کی بے پناہ اہمیت بیان کی گئی ہے ِ،انہوں نے طلبہ کو تلقین کی کہ آپ محنت کے ساتھ پڑھیں،فضول اور لغو امور سے اجتناب کریں،تفسیر ،حدیث اور فقہ کے علوم میں خصوصی مہارت حاصل کریں کہ کیوں کہ کل ہوکر آپ ہی کو قوم کی قیاد ت علمی ومذہبی قیادت کا فریضہ انجا م دینا ہے اور اس کے لئے پختہ علم ہونی چاہیئے ۔انہوں نے کہاکہ انسان کی یہ خصوصیت ہے کہ اسے علم عقل عبادت اورعمل کی صلاحیت ہے دنیامیں جتنے علوم ہیں سب اللہ کے پیداکئے ہوئے ہیں، علم دین سب سے اہم ہے اس کے بغیر زندگی گذارناناممکن ہے ۔

قرآن وحدیث کے علوم ہماری تمام ضرورتوں کی تکمیل کرتے ہیں : مولانا رابع حسنی ندوی

مولانا واضح رشید ندوی معتمد تعلیما ت دارالعلوم ندوۃ العلما ء لکھنو نے کہاکہ جامعۃ القاسم کودیکھ کراوررپورٹ سن کریہ اندازہ ہواکہ سرسید جیسادرد بانی جامعہ مفتی محفوظ الرحمان عثمانی میں ہے ایسا تعلیمی تربیتی دعوتی اورمعاشرتی نظام ہے جس سے نہ صرف مسلمانوں بلکہ غیرمسلموں کو بھی فائدہ پہنچتا ہے گویااسلام کاچراغ روشن کررہاہے ،مفتی عثمانی میں اسلام دشمن تحریکوں سے مقابلہ کرنے کاجذبہ بھی پایا جاتاہے ،انہوں نے تعلیمی بیدار کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مزید کہاکہ مسلمانوں کو تعلیم یافتہ بنانے میں ان مدارس کا خصوصی کردار ہے اگر یہ مدارس نہ ہوتے غریب مسلمانوں کی بہت بڑی تعداد حصول علم سے محروم رہ جاتی ،یہی مدرسے ہیں جس کی وجہ غریبوں کے بچے بھی تعلیم حاصل کررہے ہیں اور پہلے کے مقابلے میں تعلیمی بیداری آرہی ہے ۔مولانا صغیر احمد رحمانی نے اپنے خطاب میں کہاکہ مدارس نے ہر دور میں قوم کو تعلیم کی دولت سرشار کیا ہے ،یہ مدرسے اسلام کے قلعے ہیں،یہاں صرف تعلیم نہیں دی جاتی ہے بلکہ انسانیت کا سبق پڑھایا جاتاہے اور خدمت خلق کا جذبہ سکھایاجاتاہے ۔اس موقع پر جامعۃ لقاسم کے بانی ومہتمم مولانا مفتی محفوظ الرحمن عثمانی صاحب نے اپنے خطاب میں تمام مہمانوں کا شکریہ ادا کیا اور کہاکہ ہم تہ دل سے شکر گزار ہیں کہ عالم اسلام کی معروف شخصیت حضرت مولانا رابع حسنی ندوی صاحب نے جامعۃ القاسم میں قدم رکھاہے اور انہوں نے دعوت کو شرف قبولیت بخشتے ہوئے جامعۃ القاسم کا معائنہ فرمایا ۔

اس موقع پرمولانا محمدفرمان ندوی استاذ دارالعلوم ندوۃ العلماء لکھنو ،مولاناشاہدحسین ندوی صدرشعبہ اسلامک اسٹڈیز مولاناآزادیونیورسٹی جودھپورراجستھان ،مولانامحمودحسنی ندوی نائب مدیرتعمیرحیات ،،مولاناعبداللہ مخدومی ندوی معتمددارالاہتمام دارالعلوم ندوۃ العلماء، لکھنو مولاناشاہدحسین ندوی معاون ناظر عام ندوۃ العلماء لکھنو، مولاناصہبان ثاقب ندوی، مولانااسماعیل بھولا ندوی نے بھی اظہارخیال کیا۔نظامت کا فریضہ مفتی محمد انصار قاسمی نے بحسن وخوبی انجام دیا،قرب وجوار کے اہل مدارس ومکاتب کے علاوہ کثیرتعدادمیں لوگوں نے شرکت کی حضرت مولاناسیدمحمدرابع حسنی ندوی کے دعاء پرکانفرنس کااختتام ہوا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز