بہار مدرسہ ایجوکیشن بورڈ کے مدرسوں میں نہیں ہوتی پڑھائی: مولانا ولی رحمانی

مولانا رحمانی نے ای ٹی وی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ مدارس مسلمانوں کے تعلیمی مسائل کو حل کرنے کا بڑا ذریعہ بن سکتے ہیں لیکن بورڈ کےمدرسوں میں ایک بڑا بدلاؤ لانے کی ضرورت ہے۔

Nov 21, 2017 07:46 PM IST | Updated on: Nov 21, 2017 07:46 PM IST

 پٹنہ۔ بہار مدرسہ ایجوکیشن بورڈ کے تحت چلنے والے مدرسوں میں پڑھائی نہیں ہوتی ہے۔ یہ کہنا ہے امارت شرعیہ کےامیر شریعت مولانا ولی رحمانی کا۔ مولانا رحمانی نے ای ٹی وی سے بات کرتے ہوئے کہا کہ مدارس مسلمانوں کے تعلیمی مسائل کو حل کرنے کا بڑا ذریعہ بن سکتے ہیں لیکن بورڈ کےمدرسوں میں ایک بڑا بدلاؤ لانے کی ضرورت ہے۔

امارت شرعیہ بہار کےمرکزی دفتر میں امارت کی جانب سے چلنے والے مدرسوں کی ایک مٹینگ منعقد کی گئی ۔ اس مٹینگ میں بہار، اڑیسہ اور جھارکھنڈ کے مدارس کے ذمہ داروں نے شرکت کی۔ اس موقع پر مولانا ولی رحمانی نے بہار مدرسہ ایجوکیشن بورڈ کے مدرسوں پر سوال کھڑا کرتے ہوئے کہا کہ مدرسہ بورڈ کے مدرسوں میں تعلیمی بدلاؤ کی ضرورت ہے۔ مولانا رحمانی نے کہا کہ بورڈ کے مدرسوں میں پڑھائی نہیں ہوتی ہے۔ امارت شرعیہ اپنےماتحت چلنے والے مدرسوں میں تعلیمی میعار کو درست کرنے کی مہم میں جٹی ہے۔ اس سلسلے میں امارت مدرسوں کے اساتذہ کا ورک شاپ انعقاد کرنے کے ساتھ ہی طلباء کی بہتر تربیت پر غور کررہی ہے۔ امارت کے مطابق آئندہ ایک سالوں کے درمیان مدرسوں میں کیا کرنا ہے، وہ میٹنگ میں طے کیا گیا۔

بہار مدرسہ ایجوکیشن بورڈ کے مدرسوں میں نہیں ہوتی پڑھائی: مولانا ولی رحمانی

مولانا ولی رحمانی ۔ امیر شریعت، امارت شرعیہ بہار

دراصل، امارت شرعیہ کے ماتحت قریب 265 مدرسے چلتے ہیں، ان مدارس میں تعلیم کے معیار کو درست کرنے کے ساتھ ہی انکی تمام ضرورتوں کو پورا کرنے کا منصوبہ بنایا گیا۔ خاص طور سےاساتذہ کو تعلیم کے تعلق سےمزید کام کرنےکی اپیل کی گئی ۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز