میگھالیہ کے قبائلی سرداروں نے گائے کے گوشت پر پابندی کیلئے مودی حکومت کو لیا آڑے ہاتھوں

May 30, 2017 08:03 AM IST | Updated on: May 30, 2017 08:04 AM IST

شیلانگ: میگھالیہ کے قبائلی سرداروں نے ’دربار کی کھیلیہ نونگسنشار کا ری ہنوٹریپ‘ کے بینر تلے انسداد بے رحمی مویشاں ضوابط 2017 کے تحت ذبیحہ کے لئے جانوروں کی فروخت پر پابندی کی وجہ سے بی جے پی کی زیر قیادت قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے) حکومت پر نکتہ چینی کی ہے۔

اس اقدام کو میگھالیہ کے مقامی باشندوں کے خلاف ظالمانہ کارروائی قرار دیتے ہوئے ایسوسی ایشن کے چیئرمین جان ایف کھارشنگ نے برسراقتدار کانگریس کی زیر قیادت حکومت سے اس جابرانہ اقدام کی مخالفت کرنے کیلئے کہا ہے۔

میگھالیہ کے قبائلی سرداروں نے گائے کے گوشت پر پابندی کیلئے مودی حکومت کو لیا آڑے ہاتھوں

مسٹر کھارشنگ نے کہاکہ ماحولیات اور جنگلات کی وزارت کی طرف سے 23 مئی کو جاری گزٹ نوٹیفکیشن ایک جابرانہ اقدام ہے جس کے ذریعہ میگھالیہ کے مقامی قبائل کی کھانے پینے کی عادتوں پر پابندی لگانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ ریاست کے مقامی قبیلوں کو اس طرح کے نرالے اور غیر ضروری قوانین کی متحد ہو کر مخالفت کرنی چاہئے۔ انہوں نے مزید کہاکہ ریاستی حکومت کو بھی مرکزی حکومت کے اس طرح کے جابرانہ اقدام کی مخالفت کرنی چاہئے۔

 

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز