مودی حکومت کو روہنگیائی مسلمانوں کے مسئلہ پر انسانی بنیاد پرغور کرنا چاہیے: سوامی پارس ناتھ

Sep 11, 2017 11:17 PM IST | Updated on: Sep 11, 2017 11:17 PM IST

کلکتہ: روہنگیائی مسلمانوں سے متعلق حکومت ہند کے موقف کی سخت تنقید کرتے ہوئے سوامی وجے ترویدی یوگی ، سوامی پارس ناتھ نے کہا کہ حکومت ہند کو اس مسئلے کو انسانیت کی بنیاد پر دیکھنا چاہیے ۔ انہوں نے کہا کہ جب پاکستان، بنگلہ دیش اور افغانستان سے ہجرت کرکے آنے والوں کو حکومت ہند پناہ دے سکتی ہے تو پھر روہنگیائی مسلمانوں کے معاملے میں تنگ نظری کا مظاہرہ کیوں کیا جارہا ہے۔

ہیومن رائٹس پروٹیکشن ایسوسی ایشن کے صدر دفتر میں آج برما میں روہنگیائی مسلمانوں پر جاری مظالم اور ہندوستان میں کیمپوں میں مقیم روہنگیائی مسلمانوں کوہندوستان سے واپس کرنے کے مسئلے پر ایک احتجاجی میٹنگ ہوئی جس میں ہیومن رائٹس کے ممبران اور شہر کے سرکردہ افراد نے شرکت کرکے برما میں جاری مظالم کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ حکومت ہندکو اس پورے مسئلے پر انسانی بنیاد پر غور و فکر کرنا چاہیے اور ہندوستان جو ماضی میں کردار رہا ہے اس کو ادا کرنا چاہیے۔

مودی حکومت کو روہنگیائی مسلمانوں کے مسئلہ پر انسانی بنیاد پرغور کرنا چاہیے: سوامی پارس ناتھ

یہ مہاجرین خوراک، سر چھپانے کی جگہ اور طبی مدد کے منتظر ہیں۔: فوٹو کریڈٹ ڈی ڈبلیو ڈاٹ کام۔

ہیومن رائٹس پروٹیکشن ایسوسی ایشن کے صدر شمیم احمد نے کہا کہ ہندوستان ہمیشہ مظلوموں کے حق میں آواز بلند کیا ہے اور استعماری قوتوں کی شدید مخالفت کی ہے ۔مگر افسوس ناک بات یہ ہے کہ مودی حکومت اس مسئلے کو مذہبی عینک سے دیکھ رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ملک کے وزیر اعظم مودی نے ایک ایسے وقت میں برما کا دورہ کیا کہ جب پوری دنیا برما میں روہنگیائی مسلمانوں پر جاری مظالم کی مذمت کررہی تھی۔مگر وزیراعظم مودی نے ایک لفظ بھی اس مسئلے پر کچھ نہیں بولا۔

انہوں نے کہا کہ ایک طرف وزیر اعظم عالمی لیڈر بننے کی کوشش کررہے ہیں اور ان کی پارٹی کے لیڈران یہ دعویٰ کرتے ہیں کہ وزیراعظم عالمی سطح کے لیڈر بن چکے ہیں مگردوسری جانب روہنگیائی مسلمانوں کا مسئلہ جو ایک عالمی بحران کی شکل اختیار کرچکا ہے اس مسئلے پر بالکل خاموشی اختیار کرلی ہے۔ قائد اردو شمیم احمد نے اس کے ساتھ یہ بھی کہا کہ آن سان سوچی سے نوبل انعام واپس لے لینا چاہیے ۔کیوں کہ انہیں یہ ایوارڈ امن کے قیام کیلئے دیا گیا تھا مگر وہ عالمی پیمانے پر امن کے قیام کیلئے کوشش کیا کرتی وہ خود اپنے ملک میں مظلوم طبقہ جو گزشتہ کئی دہائیوں سے بدھشٹ دہشت گردوں کے نشانے پر ہیں کو مساوی حقوق تو کجاان کے ساتھ انصاف کرنے میں ناکام رہی ہیں اور سربراہ کے طور پر وہ دہشت گردو ں کی مذمت تک نہیں کرسکی ہیں ۔

یوگ گرو وجے ترویدی یوگی میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ مودی حکومت کے روہنگیائی مسلمانوں کو واپس کرنے کی کوششوں کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا کہ مودی کی قیادت والی حکومت ہر مسئلے فرقہ واریت کے تناظر میں دیکھ رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان ہمیشہ سے مظلوموں کی داد رسی کی ہے اور استعماری قوتوں کے خلاف صف آرا ء ہوئی ہے ۔مگر آج صورت حال برعکس ہے۔ہم اپنے اس روایتی کردار سے عاری ہوتے جارہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ہم حکومت ہند سے مطالبہ کرتے ہیں وہ اس مسئلے پر انسانی بنیاد پر غور کریں ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز