مکل رائے نے راجیہ سبھا کی رکنیت سے دیا استعفیٰ، کہا موقع پرستی کی سیاست کرتی رہی ہیں ممتا

Oct 11, 2017 08:36 PM IST | Updated on: Oct 11, 2017 08:36 PM IST

نئی دہلی۔ راجیہ سبھا کی رکنیت سے آج استعفی دینے والے ترنمول کانگریس کے معطل رکن مکل رائے نے مغربی بنگال کی وزیر اعلی اور ترنمول کانگریس کی سربراہ ممتا بنرجی پر سخت حملہ کرتے ہوئے کہا کہ محترمہ بنرجی کا کام کرنے کا طریقہ آمرانہ ہے اور وہ ہمیشہ موقع پرستی کی سیاست کرتی رہی ہیں۔ مسٹر رائے نے راجیہ سبھا چئرمین ایم وینکیا نائیڈو کو اپنا استعفی نامہ سونپنے کے بعد یہاں نامہ نگاروں سے کہا کہ اگر محترمہ بنرجی کو سیکولر طاقتوں کو مضبوط کرنے کی اتنی ہی فکر ہے اور کانگریس ان کے لئے اتنی ہی ناگزیر ہوگئی ہے تو انہیں اپنی پارٹی کا اس کے ساتھ انضمام کرلینا چاہئے۔

یہ پوچھے جانے پر کہ انہوں نے کن اسباب سے پارٹی چھوڑی ہے مسٹر رائے نے کہا کہ انہوں نے ممتا بنرجی کے ساتھ مل کر دسمبر 1997میں پارٹی بنائی تھی لیکن ممتا کی آمریت اور کنبہ پروری کی وجہ سے انہیں پارٹی چھوڑنی پڑی۔ انہوں نے کہا کہ ہر پارٹی میں کنبہ پروری ہے صرف بنگال میں ہی نہیں بلکہ قومی سطح پر بھی۔ ترنمول کانگریس کا قیام کانگریس کی مخالفت کرنے کے لئے ہوا تھا اور 2007تک ہم بی جے پی سے وابستہ رہے ۔

مکل رائے نے راجیہ سبھا کی رکنیت سے دیا استعفیٰ، کہا موقع پرستی کی سیاست کرتی رہی ہیں ممتا

ترنمول کانگریس کے معطل رکن مکل رائے: فائل فوٹو، پی ٹی آئی۔

مسٹر رائے نے کہا کہ انہوں نے چھ ماہ پہلے ہی پارٹی چھوڑنے کا فیصلہ کرلیا تھا کیوں کہ پارٹی میں صورت حال خراب ہونے لگی تھی۔

ایک سوال کے جواب میں مسٹر رائے نے کہا کہ وہ بی جے پی کو فرقہ پرست پارٹی نہیں مانتے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ جیٹلی اور کیلاش وجے ورگیہ سے ضرور ملے تھے لیکن ابھی تک بی جے پی میں شامل ہونے یا الگ پارٹی بنانے کے بارے میں کوئی فیصلہ نہیں ہوا ہے۔

مسٹر رائے کبھی ترنمول کانگریس میں دوسری پوزیشن پر تھے لیکن ممتا کے بھتیجے ابھیشیک بنرجی کے تیزی سے ابھرنے کی وجہ سے وہ غیر مطمئن بتائے جاتے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز