شرد خیمہ کا تیاگی کو خط ، لالو کی ریلی میں حصہ لینا غیر مناسب نہیں، بی جے پی سے ہاتھ ملاکر نتیش نے کیا غیر آئینی کام

Aug 28, 2017 07:22 PM IST | Updated on: Aug 28, 2017 07:22 PM IST

نئی دہلی: جنتا دل یونائٹیڈ (جے ڈی یو) کے سینئر لیڈر شرد یادو نے اپنے آپ کو اصلی جے ڈی یو قرار دیتے ہوئے آج کہا کہ بہار کے وزیر اعلی نتیش كمار نے بھارتیہ جنتا پارٹی سے ہاتھ ملا کر غیر آئینی کام کیا ہے اور ان کے دھڑے کے خلاف مناسب پلیٹ فارم سے کارروائی کے لئے عمل شروع کیا جائے گا۔

شرد گروپ کی جانب سے جے ڈی یو سکریٹری جنرل کے سی تیاگی کو بھیجے گئے خط میں کہا گیا ہے کہ راشٹریہ جنتا دل کی جانب سے پٹنہ میں منعقد ریلی میں مسٹر شرد یادو کا حصہ لینا کسی بھی طرح سے غیر مناسب نہیں ہے اور اس ریلی میں جے ڈی یو کے زیادہ تر لیڈران شامل ہوئے تھے۔ ریلی میں مسٹر شرد یادو نے جنتا دل یو کے خلاف کوئی بات نہیں کہی بلکہ مهاگٹھ بندھن برقرار رکھنے کی پارٹی کے عزم کا اعادہ کیا ہے جو انتخابی منشور کی تصدیق کرتی ہے۔ شردگروپ کی جانب سے یہ خط پارٹی صدر نتیش کمار کی طرف سے پارٹی سے معطل کئے جا چکے سکریٹری جنرل جاوید رضا نے بھیجا ہے۔

شرد خیمہ کا تیاگی کو خط ، لالو کی ریلی میں حصہ لینا غیر مناسب نہیں، بی جے پی سے ہاتھ ملاکر نتیش نے کیا غیر آئینی کام

شرد یادو: فائل فوٹو

خط میں کہا گیا ہے کہ اصل بات یہ ہے کہ مسٹر نتیش کمار اور مسٹر تیاگی نے ہی پارٹی کی پالیسیوں اور اصولوں سے ہٹ کر اپنی مرضی سے جے ڈی یو کو چھوڑ دیا ہے۔ مسٹرتیاگی کی جانب سے 25 اگست کو مسٹر یادو کو لکھے گئے خط کے سلسلے میں شرد گروپ کی جانب سے کہا گیا ہے کہ یہ 'الٹا چور کوتوال کو ڈانٹے'والی کہاوت کو ثابت کرتا ہے۔ مسٹر تیاگی نے اس خط میں مسٹر یادو سے ریلی میں حصہ نہیں لینے کی درخواست کی تھی اور کہا تھا اگر اس میں مسٹر شردیادو شامل ہوتے ہیں تو سمجھا جائے گا کہ وہ اپنی مرضی سے پارٹی سے الگ ہو گئے ہیں۔

قابل ذکر ہے کہ شرد گروپ نے الیکشن کمیشن میں خودکو حقیقی جے ڈی یو ہونے کا دعوی کیا ہے اور انتخابی نشان الاٹ کرنے کی درخواست کی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز