بہار بورڈ میں ایک اور گھوٹالہ ، فیل ہوئی طالبہ جب پہنچی ہائی کورٹ ، تو بن گئی اسٹیٹ ٹاپر

Oct 22, 2017 05:16 PM IST | Updated on: Oct 22, 2017 05:16 PM IST

پٹنہ :  بہار میں ایک مرتبہ پھر تعلیمی نظام حاشیہ پر کھرا ہوا نظر آرہا ہے۔ انٹر ٹاپرس اسکیم کا داغ دھونے کی کوشش میں مصرف بہار اسکولس ایگزام کمٹی پر اس مرتبہ بھی ایک داغ لگا ہے۔ وہ بھی ایسا داغ جسے دھونے میں اس کو عدالت سے لے کر کچہری تک کے چکر کاٹنے پڑ رہے ہیں۔

پٹنہ ہائی کورٹ نے بہار ایگزام بورڈ پر اس لئے پانچ لاکھ روپے کا جرمانہ لگایا ہے کیونکہ اس نے ایک طالبہ کو پاس ہونے کے بعد فیل اعلان کردیا تھا۔ پتنہ ہائی کورٹ میں متاثرہ ن عرضی داخل کی تو سچائی سامنے آگئی ۔

بہار بورڈ میں ایک اور گھوٹالہ ، فیل ہوئی طالبہ جب پہنچی ہائی کورٹ ، تو بن گئی اسٹیٹ ٹاپر

یہ معاملہ سہرسہ ضلع کے ایک اسکول کی طالبہ پرینکا سنگھ سے وابستہ ہے ، جسے بورڈ نے میٹرک کے نتائج میں فیل بتایا تھا ۔ پرینکا نے اس سال میٹرک کا امتحان دیا ، جہاں اسے سنسکرت میں چار اور سائنس میں 29 نمبرات ملے تھے ۔ سہرسہ ضلع کے سمری بختیار پور سیکشن کے تحٹ سٹاناباد پنچایت کے گنگا پرساد ٹولے کی رہنےو الے پرینکا سنگھ نے بی ایس ای بی کو ہائی کورٹ میں چیلنج کیا تھا ، جس کے بعد پرینکا نہ صرف فرسٹ ڈویزن سے پاس ہوئیں ، بلکہ ٹاپرس کی فہرست میں دسواں مقام بھی پایا ۔ علاوہ ازیں اب بورڈ پرینکا کو پانچ لاکھ روپے کا جرمانہ بھی دے گا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز