نتیش حکومت کو راحت ، عدالت نے انسانی زنجیر بنانے کی دی اجازت

پٹنہ ہائی کورٹ نے آج بہار سرکار کی طرف سے 21جنوری کو شراب بندی اور نشہ سے نجات کے سلسلے میں عوامی بیداری پیدا کرنے کے مقصد سے مجوزہ انسانی زنجیر میں اسکولی بچوں کو زبردستی شامل نہیں کرنے اور ٹریفک میں رکاوٹ نہیں پڑنے سے متعلق حلف نامہ دینے کے بعد پروگرام کے انعقاد کی اجازت دے دی

Jan 20, 2017 03:47 PM IST | Updated on: Jan 20, 2017 03:47 PM IST

پٹنہ : پٹنہ ہائی کورٹ نے آج بہار سرکار کی طرف سے 21جنوری کو شراب بندی اور نشہ سے نجات کے سلسلے میں عوامی بیداری پیدا کرنے کے مقصد سے مجوزہ انسانی زنجیر میں اسکولی بچوں کو زبردستی شامل نہیں کرنے اور ٹریفک میں رکاوٹ نہیں پڑنے سے متعلق حلف نامہ دینے کے بعد پروگرام کے انعقاد کی اجازت دے دی ۔

ہائی کورٹ کے کارگذار چیف جسٹس ہیمنت گپتا اور سدھیر کمار سنگھ کی بنچ نے ریاستی حکومت کو انسانی زنجیر کے دوران بند ہونے والے راستوں پر ٹریفک کا متبادل نظم کرنے کا حکم دیا ۔ بنچ نے حکومت کو پروگرام کے دوران متاثر ہونے والے راستویں اور متبادل روٹ کے سلسلے میں لوگوں کو جانکاری دینے کے لئے بڑے پیمانے پر تشہیر کرنے کا بھی حکم دیا۔ عدالت نے مجوزہ پروگرام کے دوران کسی بھی صورت میں ٹریفک متاثر نہیں ہونے دینے کا حکم دیتے ہوئے کہاکہ اس سے عام لوگوں کو کافی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

نتیش حکومت کو راحت ، عدالت نے انسانی زنجیر بنانے کی دی اجازت

اس سے قبل عدالت نے جمعرات کو ریاست کے چیف سکریٹری انجنی کمار سنگھ اور ڈائریکٹر جنرل پولیس پی کے ٹھاکر کو ذاتی طور پر بنچ کے سامنے حاضر ہو کر انسانی زنجیر میں اسکول کے بچوں کو شامل کرنے کے حکومت کے حکم کے سلسلے میں وضاحت پیش کرنے کی ہدایت د ی تھی۔ ساتھ ہی عدالت نے 21جنوری کو بہار میں قومی شاہراہوں پر پانچ گھنٹے تک ٹریفک ٹھپ کرنے کے چیف سکریٹری کے حکم پر بھی سخت اعتراض کیاتھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز