Live Results Assembly Elections 2018

مدارس کے تعلیمی معیار کو مضبوط کیا جائے تو آج بھی بدل سکتے ہیں حالات: ڈاکٹر اظہار

پٹنہ ۔ کبھی مدرسوں کی تعلیم سے ملک کے بڑے بڑے عہدے پر پہنچنا کافی آسان تھا لیکن آج مدرسوں کے تعلیمی معیار کو لیکر بحث ہو رہی ہے۔

Nov 08, 2017 06:28 PM IST | Updated on: Nov 08, 2017 06:28 PM IST

پٹنہ ۔ کبھی مدرسوں کی تعلیم سے ملک کے بڑے بڑے عہدے پر پہنچنا کافی آسان تھا لیکن آج مدرسوں کے تعلیمی معیار کو لیکر بحث ہو رہی ہے۔ پٹنہ کے مدرسہ شمس الہدیٰ میں منعقد ایک پروگرام میں مدرسوں کے سابق طلباء نے اس بات کا اظہارکیا۔ پروگرام میں شامل مدرسہ کے سابق طلباء جو اب ریٹائر ہوگئے ہیں، انہوں نے موجودہ طالب علموں کو سیاست کے بجائے پوری طرح سے تعلیم پر توجہ دینے کی اپیل کی۔

مدرسہ اسلامیہ شمس الہدیٰ میں منعقد سابق طالب علموں کے پروگرام میں شریک زیادہ تر لوگ افسر رہے ہیں اور ملک کے بڑے بڑے عہدے سے ریٹائرہوئے ہیں۔ سبھی نے اسی مدرسہ سے تعلیم حاصل کی ہے ۔ لیکن آج مدرسوں کی تعلیی میعار کو بتانے کی ضرورت نہیں ہے۔ پنجاب کے رٹائر آئ جی ڈاکٹر اظہار احمد کا کہنا ہے کہ انہوں نے جو کچھ بھی سیکھا وہ اسی مدرسہ سے سیکھا اور جب کامیاب ہوئے تو اسکی صلاحیت بھی اسی مدرسہ سے حاصل ہوئی ۔ ممبئ میں کسٹم کمیشنر کے عہدے سے رٹائر ہوئے احمد حسین کہتے ہیں جب وہ مدرسہ اسلامیہ شمس الہدیٰ میں تعلیم حاصل کرتے تھے، اس وقت بہار کے مدرسوں میں اعلیٰ گھرانے کے طلباء تعلیم حاصل کرتے تھے ۔ لیکن بدلتے وقت میں مدارس صرف غریب طلباء کے پڑھنے کی جگہ رہ گئے ہیں۔ احمد حسین نے  کہا مدارس کو سیاست سے پاک ہوکر صرف تعلیم پر سنجیدہ ہونے کی ضرورت ہے۔

مدارس کے تعلیمی معیار کو مضبوط کیا جائے تو آج بھی بدل سکتے ہیں حالات: ڈاکٹر اظہار

پروگرام میں مدرسہ اسلامیہ شمس الہدیٰ سے تعلیم حاصل کرنے والے لوگ پروفیسر بنے، وی سی بنے اور کئی اہم عہدہ پر ملک اور ملت کی تعمیر میں اپنی خدمات انجام دیں۔  سابق طلباء نے اس پروگرام میں اپنے دوستوں کے ساتھ مل کر خوشی کا اظہار کیا تو وہیں آج کی موجودہ صورت حال پر افسوس کیا۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز