آر جے ڈی کا وزیر اعلی پر تیکھا نشانہ ، اخلاقی قدروں کی دہائی دینے والے نتیش دیں استعفی

Jul 31, 2017 06:42 PM IST | Updated on: Jul 31, 2017 06:42 PM IST

پٹنہ: بہار کی اہم اپوزیشن پارٹی راشٹریہ جنتادل (آر جے ڈی) نے آج کہاکہ گزشتہ حکومت میں نائب وزیراعلی رہے تیجسوی پرساد یادو پر بدعنوانی کے الزامات لگنے کے بعد مسٹر نتیش کمار وزیراعلی کے عہدہ سے استعفی دے سکتے ہیں تو ان پر قتل کا معاملہ درج ہونے پر انہیں اخلاقی قدروں کی بنیاد پر استعفی دے دینا چاہئے۔ آر جے ڈی کے سابق رکن پارلیمان جگدانند سنگھ نے یہاں پارٹی کے ریاستی صدر رام چندر پورے کی موجودگی میں ریاستی دفتر میں منعقد ایک پریس کانفرنس میں کہاکہ مسٹر کمار پر سال 1991میں ضلع پٹنہ کے باڑسب ڈویزن میں قتل اور آرمس ایکٹ کا معاملہ درج ہوا تھا۔ اس معاملے میں سال 2009میں عدالت سے نوٹس جاری ہوچکا ہے۔

مسٹرسنگھ نے کہاکہ ایسے میں کسی مجرم کو وزیراعلی کی کرسی پر بیٹھنے کا حق نہیں رہ گیا ہے۔ اخلاقی قدروں کی دہائی دینے والے مسٹر کمار نے اس وقت کے نائب وزیراعلی پر صرف بدعنوانی کے الزامات لگنے سے ہی مہاگٹھبندھن کی حکومت کے وزیراعلی کے عہدہ سے استعفی دے دیا تھا۔ انہیں اب یہ بتانا چاہئے کہ قتل سمیت دیگر معاملات میں مجرم ہونے کے باوجود وہ کرسی پر کیسے بیٹھے ہوئے ہیں۔

آر جے ڈی کا وزیر اعلی پر تیکھا نشانہ ، اخلاقی قدروں کی دہائی دینے والے نتیش دیں استعفی

سابق رکن پارلیمنٹ نے کہاکہ اگر یہ معاملہ ختم ہوگیا ہے تو پھر مسٹر کمارنے اسمبلی انتخابات میں اپنے حلف نامہ میں اس کا اعتراف کیوں کہ ان پر قتل کا معاملہ چل رہا ہے۔ جس طرح سے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی حکمرانی والے مدھیہ پردیش میں ویاپم گھپلہ کے ثبوت مٹانے کے لئے ایک ایک کو مار ڈالا گیا اسی طرح سے سیتارام سنگھ قتل معاملہ کے شواہد کو بھی مٹانے کی کوشش کی جارہی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز