شرد یادو کے بیان’ بیٹی کی عزت سے بڑھ کر ہے ووٹ کی عزت‘ پر قومی خواتین کمیشن نے بھیجا نوٹس

Jan 25, 2017 10:39 AM IST | Updated on: Jan 25, 2017 06:03 PM IST

پٹنہ۔ انتخابی موسم کے درمیان جنتا دل (یو) کے سینئر لیڈر شرد یادو نے متنازعہ بیان دے کر سرخیاں بٹوری ہیں۔ ایک پروگرام میں شرد یادو نے ووٹ کی عزت کو بیٹی کی عزت سے بڑا بتا دیا۔ منگل کو جننايک کرپوری ٹھاکر کی جینتی پر پٹنہ میں ایک پروگرام میں شرد نے ووٹ کی اہمیت بتاتے ہوئے کہا کہ بیٹی کی عزت جائے گی تو گاؤں اور محلے کی عزت جائے گی، لیکن ووٹ ایک بار اگر فروخت ہو گیا تو ملک کی عزت اور آنے والا خواب پورا نہیں ہو سکتا۔

پروگرام میں شرد یادو سیاست کے گرتے معیار اور پیسے-ووٹ کے گٹھ جوڑ پر بات کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ بیلیٹ پیپر کے بارے میں بڑے پیمانے پر جگہ جگہ سمجھانے کی ضرورت ہے۔ بیٹی کی عزت سے بڑی ووٹ کی عزت ہے۔ اگر ایک بار ووٹ بک گیا تو آنے والا خواب پورا نہیں ہو پائے گا۔

شرد یادو کے بیان’ بیٹی کی عزت سے بڑھ کر ہے ووٹ کی عزت‘ پر قومی خواتین کمیشن نے بھیجا نوٹس

فائل فوٹو

شرد یادو نے اس بات کو لے کر بھی کافی تشویش ظاہر کی کہ پیسے نہ ہونے کی وجہ سے ان کی پارٹی اتر پردیش کا الیکشن لڑنے کے قابل نہیں نظر آ رہی ہے۔

وہیں،  قومی خواتین کمیشن نے شرد یادو کو بیٹيوں کے بارے میں قابل اعتراض تبصرے کے لئے آج نوٹس جاری کیا۔ کمیشن کے ذرائع کے مطابق مسٹر یادو نے کل ایک جلسہ عام میں بیٹی اور ووٹ کا موازنہ کرتے ہوئے نازیبا تبصرہ کیا جس پر متعدد لوگوں نے اعتراض کیا ہے۔ مسٹر یادو نے کہا ہے، ’’ووٹ کی عزت بیٹیوں کی عزت سے بھی اہم ہے۔ اگر بیٹی کی عزت سے معاہدہ کیا جاتا ہے تو گاؤں یا کمیونٹی متاثر ہوتا ہے لیکن اگر ووٹ کی عزت سے سمجھوتہ کیا جاتا ہے تو پوری قوم پر اثر پڑے گا‘‘۔ تاہم بعد میں انہوں نے صفائی دیتے ہوئے کہا، ’’میں نے بالکل غلط نہیں کہا، جیسے بیٹی سے محبت کرتے ہیں ویسے ہی ووٹ سے بھی ہونا چاہئے، تبھی ملک اور حکومت بہترین بنے گی۔ ووٹ اور بیٹی کے تئیں محبت ایک سی ہونی چاہئے‘‘۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز