لالو۔ کیجریوال کا دفاع کرنے والے بی جے پی کے شتروگھن سنہا کو سشیل نے غدار قرار دیا

May 22, 2017 06:58 PM IST | Updated on: May 22, 2017 06:58 PM IST

پٹنہ۔  راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کے صدر لالو پرساد یادو اور دہلی کے وزیراعلی اروند کیجری وال کے دفاع میں اترے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے ممبر پارلیمنٹ اور فلم اداکار شتروگھن سنہا کو بی جے پی قانون ساز پارٹی کے لیڈر سشیل کمار مودی نے غدار قرار دیتے ہوئے انہیں پارٹی سے برخاست کرنے کا مطالبہ کیا۔ مسٹر مودی نے آج یہاں ٹویٹ کرکے کہا ’یہ ضروری نہیں کہ جو شخص مشہور ہے، اس پر اعتبار کیا جائے، جتنی جلدی ہو گھر سے غداروں کو باہر کئے جائیں‘۔ انہوں نے مزید لکھا کہ جس لالو کی بینامی جائیداد کے دفاع میں نتیش نہیں اترے، اس کے دفاع میں بی جے پی کے ’شترو‘ کود پڑے۔ اس سے قبل شتروگھن سنہا نے ٹویٹ کرکے عام آدمی پارٹی کے کنوینر کی تعریف کرتے ہوئے کہا، ’ذاتی طور پر میں سیاستدانوں اور خاص کر کیجری وال کی معتبریت، جدوجہد اور سماج کے تئیں ان کے عزم کا احترام کرتا ہوں۔‘ شتروگھن سنہا نے منفی اور کیچڑ اچھالنے والی سیاست کی بھی سخت مخالفت کرتے ہوئے کہا، ’مخالفت کی سیاست بہت ہوچکی ہے اور مسٹر کیجری وال ، مسٹر یادو یا سشیل مودی پر جو الزام لگائے جا رہے ہیں، ان کے بدلے ثبوت دئے جانے چاہئیں اور ثبوت نہیں ہیں تو خاموش ہوجاؤ‘۔

اس دوران مسٹر سنہا اور مسٹر مودی کے ’ٹویٹر وار‘ میں آر جے ڈی کے سربراہ لالو پرساد یادو کے بیٹے اور بہار کے نائب وزیر اعلی تیجسوی یادو بھی کود پڑے ہیں۔ انہوں نے مسٹر سنہا کی حمایت میں ٹویٹ کرکے کہا ’مکمل سچ۔ ایک الزام، محض الزام اور خالص جھوٹ کا پلندہ ہی رہتا ہے جب تک ثابت نہ ہوجائے۔ لیکن کچھ لوگوں کی سیاست ہی الزام لگانے پر زندہ ہے‘۔ مسٹر یادو نے آگے لکھا، ’جھوٹے الزام لگانے والا بہار بی جے پی کا وہ لیڈر تمام رنگوں میں جھوٹ بولنے کا ماہر ہے۔ وہ شاید سیلکٹیو امنیسیا (جان بوجھ کر کسی بات کو بھول جانا) اور کلر بلائنڈنیس کا شکار ہے۔‘ انہوں نے ایک دیگر ٹویٹ میں کہا، ’جو آپ کو ’شترو‘ کہتا ہے وہ خود ’سشیل‘ کیسے ہوا؟ انہیں بی جے پی میں آپ (شتروگھن سنہا) اور کیرتی آزاد جیسے کئی منتخب عوامی نمائندوں سے مسئلہ ہے‘۔

لالو۔ کیجریوال کا دفاع کرنے والے بی جے پی کے شتروگھن سنہا کو سشیل نے غدار قرار دیا

دریں اثنا جنتا دل یونائٹیڈ (جے ڈی یو) کے ریاستی ترجمان اور قانون ساز کونسل کے رکن سنجے سنگھ نے کہا کہ جب بی جے پی کے دو ممبر پارلیمنٹ تھے تب مسٹر سنہا نے پارٹی کو کھڑا کیا۔ اب انہیں کنارے کھڑا کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسٹر سنہا نے مسٹر سشیل مودی جیسے لیڈروں کو واضح جواب دیا ہے اور کہا ہے کہ منفی اور کیچڑ اچھالنے والی سیاست درست نہیں ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز