بہار بورڈ نتائج میں گڑبڑی پر تیجسوی یادو نے نتیش کمار پر سادھا نشانہ ، معافی مانگنے کا مطالبہ

ہار کے سابق نائب وزیر اعلی تیجسوی یادو نے بہار انٹر میڈیٹ امتحان کے نتائج میں مسلسل آ رہی گڑبڑیوں کے لئے ریاست کی نتیش حکومت کو ذمہ دار ٹھہرایا اور کہا کہ حکومت کی اندیکھی کی وجہ سے ریاستی بورڈ کے امتحان میں ہر سال گھوٹالہ ہو رہا ہے

Jun 10, 2018 07:10 PM IST | Updated on: Jun 10, 2018 07:10 PM IST

پٹنہ : بہار کے سابق نائب وزیر اعلی تیجسوی یادو نے بہار انٹر میڈیٹ امتحان کے نتائج میں مسلسل آ رہی گڑبڑیوں کے لئے ریاست کی نتیش حکومت کو ذمہ دار ٹھہرایا اور کہا کہ حکومت کی اندیکھی کی وجہ سے ریاستی بورڈ کے امتحان میں ہر سال گھوٹالہ ہو رہا ہے۔ مسٹر یادو نے آج مائیکرو بلاگنگ سائٹ ٹوئٹر پر لکھاکہ’انٹر کا امتحان دینے والے طالب علموں میں ایسے کئی طالب علم ہیں جنہوں نے زیادہ سے زیادہ نمبرات سے بھی زیادہ نمبر حاصل کئےہیں۔ حکومت میں کوئی بھی اسے لے کر فکرمند نہیں ہے۔ نتیش جی کو ہر سال ہونے والی بے ضابطگیوں سے پشیماں ہونا چاہئے۔ انہیں ریاست کی عوام سے معافی مانگنی چاہئے۔ ہر سال بہار بورڈ کے نتائج میں گھوٹالہ ہورہاہے‘۔

اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ بہت سے طالب علموں نے قومی اہلیتی داخلہ امتحان (نيٹ) میں شاندار نمبرات حاصل کئے، لیکن وہ بہار اسکول امتحان کمیٹی کی انٹر میڈیٹ امتحان میں فزکس اور کیمسٹری میں ایک سے زیادہ نمبرحاصل کرنے میں ناکام رہے۔انہوں نے کہا کہ نتیش کمار کی قیادت والی قومی جمہوری اتحادوالی حکومت میں کوئی نہیں ہے جو متا ثرطالب علموں سے ہمدردی رکھتا ہو کیونکہ سب ایک دوسرےپر الزامات لگانے میں مصروف ہیں۔

بہار بورڈ نتائج میں گڑبڑی پر تیجسوی یادو نے نتیش کمار پر سادھا نشانہ ، معافی مانگنے کا مطالبہ

تیجسوی یادو ۔ فوٹو نیوز 18

مسٹر یادو نے مزید کہا کہ بہار انٹر میڈیٹ نتائج 2018 میں گڑبڑیوں کے خلاف ریاست کے ہر شہر اور گاؤں میں طالب علم سڑکوں پر ہیں۔ اس امتحان میں جو طالب علم تمام موضوعات میں کامیاب ہو گئے ہیں، انہیں بھی فیل قرار دیکران کے نتائج کو التوامیں ڈال دیا گیا ہے۔

قابل ذکر یہ ہے کہ بي ایس ای بی کی انٹرمیڈیٹ امتحان کے نتائج میں گڑبڑی کو لے کر پوری ریاست میں طلبااحتجاج کررہےہیں۔گڑبڑی کا عالم یہ کہ ہندوستانی ٹیکنالوجی انسٹی ٹیوٹ کے مشترکہ داخلہ امتحان (آئی آئی ٹی جےای ای) مین کا امتحان پاس کر چکے طالب علم انٹرمیڈیٹ میں فیل ہو گئے ہیں۔ وہیں کسی کو کسی پیپر میں اوسط سے زیادہ نمبرات دیےگئے تو کچھ طالب علموں کو ایک یا پھر زیرو نمبر ملے ہیں۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز