مغربی بنگال تشدد : بی جے پی ، کانگریس اور بایاں محاذ کسی کے بھی وفد کو نہیں ملی فساد زدہ علاقہ کے دورہ کی اجازت

Jul 07, 2017 03:04 PM IST | Updated on: Jul 07, 2017 03:04 PM IST

کلکتہ: بی جے پی ، کانگریس اور بایاں محاذ کے لیڈروں کو شمالی 24پرگنہ کے بشیر ہا ٹ سب ڈویژن کے فساد زدہ علاقوں کا دورہ کرنے سے پولس انتظامیہ نے روک دیا ۔ ضلع کے ایک سینئر افسر نے کہا کہ حالات اب بھی کشیدہ ہیں ۔ان حالات میں ہم کسی بھی وفد کو جانے نہیں دیں گے ، کیوں کہ ان کے دورہ سے حالات مزید خراب ہوسکتے ہیں ۔بایاں محاذ کے وفد میں شامل ممبر اسمبلی سوجن چکرورتی ے کہا کہ ہمیں اشوک نگر علاقے میں روک دیا گیا ہے کیوں کہ ہمارے جانے سے حالات مزید خراب ہوسکتے تھے۔انہوں نے کہا کہ پولس کی دلیل ناقابل قبول ہے ۔ہم یہاں سیاسی پروگرام کے تحت نہیں جارہے تھے بلکہ ہم عوام سے ملاقات کرنے کیلئے جارہے تھے ۔

انہوں نے کہا کہ بایاں محاذ نے پولس انتظامیہ اور ترنمول کانگریس کی حکومت کے خلاف باراسات میں ریلی کا انعقاد کیا ہے ۔ان ہی وجوہات کی بنیاد پر کانگریس کے ریاستی صدر ادھیر رنجن چودھری کی قیادت والے وفد کوبھی باراسات میں روک دیا گیا ہے ۔ بی جے پی کے وفد کی قیادت کررہے ریاستی صدر دلیپ گھوش کو بھی بادوریا جانے سے روک دیا گیا ہے ۔فیس بک پر متنازع پوسٹ کے بعد سے ہی پورا علاقہ گزشتہ ایک ہفتے سے فرقہ وارانہ تشدد کی زد میں ہے ۔

مغربی بنگال تشدد : بی جے پی ، کانگریس اور بایاں محاذ کسی کے بھی وفد کو نہیں ملی فساد زدہ علاقہ کے دورہ کی اجازت

سینئر پولس افسر نے بتایا کہ پولیس اور پارلیمنٹری فورسیس نے آج پورے علاقے کا دورہ کیا ہے۔ریاستی حکومت نے کہا ہے کہ بادوریا، سوروپ نگر، دے کنگا اور بشیرہاٹ میں حالات کنٹرول میں ہے۔کل شام آر ایس ایس اور بجرنگ دل حامیوں نے بشیر ہاٹ میں ایک درگاہ پر حملہ کردیا اور آس پاس کے مسلمانوں کے دوکانوں میں بھی توڑ پھوڑ کی ۔ پولس نے بتایا کہ ان علاقوں میں عوام گھروں میں بند ہیں ، بازار دوکانیں ،اسکول اور ٹرانسپورٹ بالکل بند ہیں ۔

وزیرا علیٰ ممتا بنرجی نے تمام سیاسی جماعتوں کے نمائندوں سے بات کی تھی کہ وہ فسادزدہ علاقے کا دورہ نہ کریں ۔اس کے باوجود سیاسی جماعتوں کے وفد نے علاقے کا دورہ کیا ۔ ضلع کے ایک سینئر آفیسر نے کہا کہ فساد زدہ علاقے میں ماحول اب بھی کشیدہ ہیں ، ہم نے کسی بھی وفد کو علاقہ کا دورہ کرنے سے روک دیا ہے ۔کیوں کہ ان کے دورہ سے حالات خراب ہوسکتے ہیں ۔پورے علاقے میں دفعہ 144نافذ کردیا گیا ہے ۔افسر نے کہا کہ انتظامیہ کوئی بھی رسک لینا نہیں چاہتی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز