میں کوئی روبوٹ نہیں ہوں ، میرے جسم کو جانچ سکتے ہیں ، جب ضرورت ہوگی آرام لے لوں گا : وراٹ کوہلی

Nov 15, 2017 06:28 PM IST | Updated on: Nov 15, 2017 06:28 PM IST

کولکاتہ: انڈین کرکٹ ٹیم کے کپتان وراٹ کوہلی مسلسل کھیل رہے ہیں اور اچھی فارم میں بھی ہیں اور انہوں نے جمعرات سے سری لنکا کے خلاف سہ روزہ ٹیسٹ میچ کی سیریز سے پہلے کہا کہ وہ فی الحال آرام کرنے کے موڈ میں نہیں ہیں اور جب انہیں آرام کی ضرورت محسوس ہوگی تب وہ اس کےلئے انڈین کرکٹ بورڈ سے بات کریں گے۔ انڈین کرکٹ ٹیم کی قیادت کررہے وراٹ مسلسل سیریز میں ٹیم کا حصہ ہیں۔خبریں تھیں کہ وہ کام کے بوجھ کی وجہ سے سری لنکا کے خلاف میچ میں آرام لے سکتے ہیں۔کچھ خبروں کے مطابق وراٹ اپنی دوست اور اداکارہ انوشکا شرما کے ساتھ شادی کرنے کےلئے بھی کچھ دن میدان سے دور رہ سکتے ہیں۔حالانکہ وراٹ نے فی الحال خود ہی ان خبروں کو مسترد کردیاہے۔

سری لنکا کے خلاف ایڈن گارڈن میں ٹیسٹ سے قبل بدھ کو کپتال نے یہاں پریس کانفرنس میں اس سلسلے میں پوچھنے پر کہا’یقینی طورپر مجھے آرام کی ضرورت ہے اور مجھے آرام کیوں نہیں چاہئے۔جب مجھے لگے گا کہ میرے جسم کو آرام کی ضرورت ہے کہ میں اس کے بارے میں بات کروں گا۔انہوں نے کہا’’میں کوئی روبوٹ نہیں ہوں،آپ میرے جسم کو جانچ سکتے ہیں اس میں بھی خون ہے۔‘‘ٹیم کے آل راؤنڈر ہاردک پانڈیا نے مسلسل کھیلنے کی وجہ سے سری لنکا کے خلاف پہلے دو ٹیسٹ میچوں سے آرام مانگا ہے۔

میں کوئی روبوٹ نہیں ہوں ، میرے جسم کو جانچ سکتے ہیں ، جب ضرورت ہوگی آرام لے لوں گا : وراٹ کوہلی

لگاتار کھیلنےو الے کھلاڑیوں کے جسم اور فٹنس پر توجہ کی ضرورت

ہندوستانی کپتان نے کہا،’’میرا خیال ہے کہ لوگوں کو یہ بات سمجھنی ہوگی۔سبھی کام کے بوجھ کی بات کرتے ہیں،کھلاڑی کو آرام دینا چاہئے یا نہیں۔ہر کھلاڑی سال میں مسلسل کئی میچ کھیلتا ہے۔سبھی کو آرام کی ضرورت ہے ۔لیکن یہ بھی سمجھنا ہوگا کہ ٹیم کا ہر کھلاڑی ہی سال بھر نہیں کھیلتا رہتا۔‘‘ وراٹ نے حالانکہ مانا کہ جو کھلاڑی سال بھر مسلسل کھیلتے رہتے ہیں ان کے جسم اور فٹ نیس پر توجہ دئے جانے کی ضرورت ہے ۔سبھی یو کہ نظر آتا ہے کہ مسلسل کھیل رہے ہیں لیکن آپ کو دیکھنا ہوگا کہ اس نے میدان پر کتنا وقت گزارا ہے۔

کھلاڑی پر کام کے بوجھ کو دیکھنا ہوگا

ٹیم کے اسٹار بلے باز نے کہا،’’ہم جب آرام کی بات کرتے ہیں تو یہ دھیان دینا ہوگا کہ ہم نے میدان پر کتنے رن لئے یا کتنے اوور مشکل حالات میں گیندبازی کی۔جسم پر کن باتوں کااثر پڑتا ہے ہمیں اس پر بھی توجہ دینے کی ضرورت ہوتی ہے۔لوگ ان باریکیوں پر توجہ نہیں دیتے ہیں اور آرام کی بات کرنے لگتے ہیں۔‘‘کپتان نے کہا،’’ہمیں کھلاڑی پر کام کے بوجھ کو دیکھنا چاہئے ۔اگر چیتیشور پجارا کو دیکھیں تو وہ ٹیسٹ میں سب سے زیادہ کھیلتے ہیں اور زیادہ دباؤ ان پر ہوتا ہے کیونکہ وہ کریز پر زیادہ وقت دے رہے ہیں اور انہیں ایک وقت کے بعد آرام کی ضرورت ہوگی۔لیکن ہرکوئی ان باتوں کو نہیں سمجھتا ۔ہم نے20 سے 25 کھلاڑیون کی ایک مضبوط ٹیم تیار کی ہے اور ہم اہم کھلاڑیوں کو ضرورت کے وقت گنوا نہیں سکتے۔‘‘

ٹیم میں توازن بنائے رکھنے کی ضرورت

انہوں نے کہا،’’ہمیں ٹیم میں توازن بنائے رکھنے کی ضرورت ہے تاکہ ہم صحیح طریقے سے آگے بڑھ سکیں۔اگر بہت کرکٹ کھیلا جارہا ہے تو جو کھلاڑی تینوں طرح کے میچوں میں کھیل رہے ہیں ان کے لئے فٹ نیس کو برقرار رکھنا مشکل ہوگا۔ان باتوں کو دھیان میں رکھکر ہی ہم کام کے بوجھ کو بانٹ سکتے ہیں۔‘‘ ہندوستان اور سری لنکا کے درمیان تین ٹیسٹوں کی سیریز کا پہلا میچ جمعرات سے کولکاتہ کے ایڈن گارڈن میدان پر شروع ہوگا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز