مغربی بنگال گورنر کیسری ناتھ ترپاٹھی کی راجناتھ سے گفتگو ، وزیر اعلی ممتا کے رویہ پر حیرانی کا اظہار

Jul 05, 2017 11:41 AM IST | Updated on: Jul 05, 2017 11:41 AM IST

کولکاتہ : مغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتا بنرجی کے الزامات کے بعد گورنر كیسری ناتھ ترپاٹھی نے مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ سے بات کرکے ان الزامات پر حیرت ظاہر کی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ مسٹر ترپاٹھی نے مسٹر سنگھ سے بات کرکے انہیں بتایا کہ وہ وزیر اعلی کے الزامات سے حیران ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعلی کا رویہ اور زبان کا لہجہ حیران کرنے والا ہے۔ کولکاتہ میں راج بھون کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے، ’’پریس کانفرنس کے دوران کل وزیر اعلی کی استعمال کی گئی زبان اور ان کے رویہ پر گورنر حیران ہیں۔ وزیر اعلی اور گورنر کے درمیان بات چیت عام طور پر خفیہ ہوتی ہے اور کسی سے بھی اس کا انکشاف کئے جانے کی توقع نہیں ہوتی‘‘۔

سرکاری ذرائع نے بتایا کہ گورنر آئینی عہدے سے بندھے رہنے کی وجہ سے ریاست کے معاملات میں خاموش تماشائی نہیں رہ سکتے ۔ میڈیا رپورٹوں کے مطابق محترمہ بنرجی نے کل گورنر کی مذمت کرتے ہوئے الزام لگایا تھا کہ گورنر نے انہیں دھمکی دی ہے۔ انہوں نے کہا تھا، ’’گورنر نے مجھے فون پر دھمکی دی ہے۔ گورنر آئینی عہدے پر ہونے کے باوجود بی جے پی کے حق میں بول رہے ہیں۔ میں نے ان سے کہہ دیا ہے کہ وہ اس طرح سے بات نہیں کر سکتے ہیں‘‘۔ وزیر اعلی کے ان الزامات کے کچھ ہی دیر بعد راج بھون سے یہ بیان جاری ہوا۔

مغربی بنگال گورنر کیسری ناتھ ترپاٹھی کی راجناتھ سے گفتگو ، وزیر اعلی ممتا کے رویہ پر حیرانی کا اظہار

مرکزی وزیر اور دارجلنگ حلقہ سے بی جے پی کے ایم پی ایس ایس آہلووالیہ نے کہا کہ محترمہ بنرجی نے گورنر کے خلاف جو الزام لگائے ہیں وہ بدبختانہ ہیں۔ مسٹر ترپاٹھی نے مرکزی وزیر داخلہ کے ساتھ شمالی 24 پرگنہ ضلع کے بشيرهاٹ سب ڈویژن کے بدوريا کی صورت حال کے بارے میں بھی تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔ مغربی بنگال سے بی جے پی کے ایک اور رہنما اور مرکزی وزیر بابل سپریو نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ گورنر کے خلاف لگائے الزامات ریاست کے تشدد زدہ علاقوں کی صورت حال سے توجہ ہٹانے کی کوشش ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز