مانچیسٹر دھماکہ آنکھوں دیکھی: لوگوں نے بتایا، ہر کوئی چیخ رہا تھا، بھاگ رہا تھا

May 23, 2017 09:39 AM IST | Updated on: May 23, 2017 09:54 AM IST

مانچیسٹر۔ مانچیسٹر کے ارينا میں پیر کی رات امریکی پاپ سنگر اريانا گرانڈے کے کنسرٹ کے دوران دو دھماکوں میں 19 لوگوں کی جان چلی گئی۔ عینی شاہدین نے کہا  کہ انھوں نے ایک زور دار دھماکے کی آواز سنی جس کے بعد بھگدڑ مچ گئی۔ پولیس نے عوام سے کہا ہے کہ وہ متاثرہ علاقے سے دور رہیں اور واقعے میں ہلاک اور زخمی ہونے والوں کی تفصیلات جلد فراہم کی جائیں گی۔ ایک عینی شاہد 22 سالہ روبرٹ ٹیمپکن نے بتایا کہ’ہر ایک چیخ رہا تھا اور بھاگ رہا تھا، فرش پر لوگوں کے کوٹ اور فون گرے ہوئے تھے۔ لوگوں نے ہر چیز پھینک دی۔‘ انھوں نے بتایا کہ کچھ لوگ چیخ رہے تھے کہ انھوں نے خون دیکھا ہے۔ تاہم دیگر کہہ رہے تھے غبارہ پھٹنے یا ا سپیکر کی زوردار آواز آئی ہے۔

روبرٹ کے مطابق ’وہاں بہت سی ایمبولنس تھیں۔ میں نے دیکھا کہ کسی کو طبی امداد فراہم کی جا رہی تھی۔ میں یہ نہیں بتا سکتا کہ اسے کیا ہوا تھا۔‘ اطلاعات کے مطابق کنسرٹ کے مقام پر 18000 افراد کی گنجائش ہے اور واقعہ کے وقت وہاں ہزاروں افراد موجود تھے جن میں بڑی تعداد نوجوانوں کی تھی۔ تاہم یہ واضح نہیں کہ کل کتنے لوگوں کو ٹکٹ ملا تھا۔

مانچیسٹر دھماکہ آنکھوں دیکھی: لوگوں نے بتایا، ہر کوئی چیخ رہا تھا، بھاگ رہا تھا

رائٹرز

ایک اور عینی شاہد اینڈی ہولے جو کہ اپنی بیوی اور بیٹی کو لینے کے لیے وہاں پہنچے تھے نے بتایا کہ ’میں انتظار کر رہا تھا کہ دھماکہ ہو گیا جس کی وجہ سے میں ایک دروازے سے 30 فٹ دور تک جا گرا۔‘

راکیل نامی عینی شاہد نے بتایا کہ وہ مانچیسٹر ایرینا کے بلاک نمر 213 میں اپنی 14 سالہ بیٹی کے ہمراہ موجود تھیں۔ وہ کہتی ہیں کہ بھیٹر سے بچنے کے لیے انھوں نے کنسرٹ کے اختتام سے قبل ہی باہر نکلنے کا فیصلہ کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ 'جیسے ہی ہم باہر نکلے ہم نے ایک زور دار آواز سنی، پہلے تو ہم نے سوچا ہم نے کنسرٹ میں کچھ مِس کر دیا ہے، جیسے ہی ہم واپس پلٹے وہاں لوگوں کو ہجوم تھا جو اپنے قدموں پر گر رہے تھے لوگ فرش پر گرے ہوئے تھے۔'

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز