لندن میں کثیر منزلہ عمارت میں بھیانک آتشزدگی ،چھ افراد ہلاک ، 70 سے زائد زخمی

Jun 14, 2017 09:09 PM IST | Updated on: Jun 14, 2017 09:09 PM IST

لندن: وسطی لندن میں 24 منزلہ رہائشی گرین فیل ٹار میں آج بھیانک آ گ لگ جانے سے چھ افراد کی موت ہوگئی اور 70 سے زیادہ زخمی ہوگئے۔ عمارت میں اب بھی کئی لوگ پھنسے ہوئے ہیں اور آگ پر پوری طرح قابو نہیں پایا جاسکا ہے۔ وزیراعظم تھریسا مے نے اس حادثے میں لوگوں کی ہلاکت پر گہرا دکھ ظاہر کیا ہے۔ مسز مے نے ہنگامی سروسز کے تعلق سے فائر بریگیڈ امور کے وزیر نک ہرڈ کو ہندوستانی وقت کے مطابق رات ساڑھے نو بجے میٹنگ بلانے کو کہا ہے۔

پولیس نے کہا ہے کہ شمالی کینسنگٹن علاقہ میں واقع کثیر منزلہ عمارت میں رات ایک بجے لگی آگ میں چھ لوگوں کی ہلاکت کی تصدیق ہوئی ہے۔ مرنے والوں کی تعداد بڑھنے کا اندیشہ ہے۔ آگ پر قابو پانے کے لئے 45 فائر بریگیڈ کی گاڑیوں کے ساتھ 200 ملازمین نے سخت مشقت کرکے آگ بجھانے کی کوشش کی اور اب بھی اس میں مصروف ہیں۔ ماہرین کی ایک ٹیم نے عمارت کی جانچ کرکے کہا کہ عمارت گرنے کا خظرہ نہیں ہے اور ملازم کام جاری رکھ سکتے ہیں۔

لندن میں کثیر منزلہ عمارت میں بھیانک آتشزدگی ،چھ افراد ہلاک ، 70 سے زائد زخمی

(Image: Reuters)

قبل ازیں لندن کے میئر صادق خان نے حادثہ پر گہرہ دکھ ظاہر کرتے ہوئے کثیر منزلہ عمارتوں کی حفاظت کے حوالے سے کئی سوال کھڑے کئے ہیں۔ مسٹر خان نے کہا کہ کثیر منزلہ عمارتوں کی سکیورٹی کو لیکر سنجیدگی سے غور کرنے کی ضرورت ہے اور اس سے وابستہ تمام سوالوں کے جواب واضح ہونے چاہئیں۔ کچھ لوگوں نے کہا کہ انہیں صلاح دی گئی تھی کہ کبھی عمارت میں آگ لگتی ہے تو وہ اپنے فلیٹوں کے اندر رہیں۔ گرین فیل ٹاور ایسوسی ایشن نے عمارت میں آگ لگنے کا اندیشہ ظاہر کرتے ہوئے فکر مندی ظاہر کی تھی۔

مسٹر خان نے کہا کہ شہر میں کئی کثیر منزلہ عمارتیں ہیں اور غلط صلاح، خراب رکھ رکھاؤ اور دیگر اسباب سے لوگوں کی حفاظت کو داؤ پر نہیں لگایا جاسکتا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز